افغانستان: سیلابی ریلوں سے بائیس ہلاک

Image caption اطلاعات کے مطابق بہت سارے افراد کاروں میں تھے جب ان کی کاریں پانی کے ریلے میں بہہ گئیں

افغانستان میں حکام کے مطابق سیلابی ریلوں کی وجہ سے کابل صوبے میں اب تک بائیس افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

ملک کے قدرتی آفات سے نمٹنے کے ادارے کے حکام نے بی بی سی کو بتایا کہ سیلاب شکردرہ کے علاقے میں ہفتۂ آخر کی بارشوں کی وجہ سے آیا۔

خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ ہلاک ہونے والوں میں سے اکثریت خواتین اور بچوں کی ہے۔

بہت سارے خاندان اس علاقے میں عید کی چھٹیاں گزارنے کی غرض سے گئے تھے جو اپنے سیبوں اور انگور کے باغات کی وجہ سے بہت شہرت رکھتا ہے۔

اطلاعات کے مطابق بہت سارے افراد کاروں میں تھے جب ان کی کاریں پانی کے ریلے میں بہہ گئیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ سیلاب کے نتیجے میں مکانات کے ساتھ زرعی رقبہ اور بھلوں کے باغات شدید متاثر ہوئے ہیں۔

وزارتِ داخلہ کے ترجمان صدیق صدیقی نے رائٹرز کو بتایا کہ ’ہم ابھی تک لوگوں کو بچانے اور گمشدہ افراد کی تلاش کے کام میں مصروف ہیں۔‘

اس مہینے کے آغاز میں ہمسایہ ملک پاکستان میں سیلاب کے نتیجے میں کم از کم اسی افراد ہلاک اور املاک کو شدید نقصان پہنچا۔

اسی بارے میں