ڈیانا ہلاکت: ’نئی معلومات کا جائزہ لیا جا رہا ہے‘

Image caption عدالت نے کہا تھا کہ حادثے کے ذمہ دارگاڑی کا ڈرائیور اورگاڑی کا پیچھا کرنے والے فوٹوگرافر تھے

لندن کی میٹروپولیٹن پولیس کا کہنا ہے کہ وہ 1997 میں شہزادی ڈیانا اور ان کے ساتھی دودی الفائد کی ہلاکت کے بارے میں موصول ہونے والی نئی معلومات کا جائزہ لے رہے ہیں۔

لندن پولیس کے مطابق وہ نئی معلومات کی صحت اور اہمیت کا جائزہ لے رہے ہیں۔ تاہم پولیس نے واضح کیا کہ نئی معلومات کا جائزہ لینے کا مطلب یہ نہیں کہ شہزاردی ڈیانا کی ہلاکت کی تحقیقات کو دوبارہ کھولا جا رہا ہے۔

یاد رہے کہ 1997 میں فرانس کے دارالحکومت پیرس میں شہزادی ڈیانا اور دودی الفائد کار حادثے میں ہلاک ہوگئے تھے۔

یاد رہے کہ سنہ 2008 میں لندن کی ایک عدالت نے انیس سو ستانوے میں شہزادی ڈیانا کی ہلاکت کی دس سال بعد تفتیش کے بارے میں فیصلہ سناتے ہوئے اسے ’خلاف قانون‘ ہلاکت قرار دیا ہے اور کہا کہ اس کے ذمہ دارگاڑی کا ڈرائیور اورگاڑی کا پیچھا کرنے والے فوٹوگرافر تھے۔

عدالت نے یہ بھی کہا کہ شہزادی ڈیانا اور ان کے قریبی ساتھی ڈوڈی الفائد نے گاڑی میں اپنے حفاظتی بند نہیں لگائے ہوئے تھے اور یہ بھی ان کی ہلاکت کا سبب بنا۔

برطانوی ولی عہد کی سابق اہلیہ شہزادی ڈیانا اکتیس اگست انیس سو ستانوے میں پیرس میں ہونے والے گاڑی کے حادثے میں ہلاک ہوئی تھیں۔ وہ دودی الفائد کے ساتھ رِٹز ہوٹل سے مرسیڈیز گاڑی میں روانہ ہوئی تھیں اور درجنوں فوٹوگرافرز نے ان کی گاڑی کا پیچھا کیا تھا۔

گاڑی دودی الفائد کے ڈرائیور ہنری پال چلا رہے تھے جنہوں نے قانونی مقدار سے کہیں زیادہ شراب پی رکھی تھی اور جس کے بارے میں عدالتی تحقیق نے اتفاق کر لیا ہے کہ وہ نشے کی حالت میں تھے۔

شہزادہ چارلز اور شہزادی ڈیانا کی شادی 29 جولائی 1981 کو ہوئی تھی۔ ایک سال بعد ہی شہزادہ ولیم اور اس کے دو سال بعد شہزادہ ہیری کی ولادت ہوئی۔ ڈیانا اس وقت بیس برس کی تھیں۔

کچھ عرصے کے بعد ہی میاں بیوی میں اختلافات پیدا ہونے شروع ہو گئے اور 1993 میں جوڑے میں علیحدگی ہو گئی اور ان کی شادی باقاعدہ طور پر 1996 میں ختم ہوئی۔

اگست 1997 میں لیڈی ڈیانا کا فرانس میں وہ کار حادثہ ہوا جو ان کے لیئے جان لیوا ثابت ہوا۔ اس حادثے کو اب بھی کئی لوگ ایک سازش قرار دیتے ہیں۔

شہزادہ چارلز نے اپنی دیرینہ دوست کمیلا پارکر بولز سے 2005 میں دوسری شادی کر لی۔

اسی بارے میں