سنوڈن: کیمرون کا گارڈین اخبار سے رابطہ

Image caption برطانوی اخبارگارڈین نے سنوڈن سے حاصل شدہ معلومات کو شائع کیا ہے

اطلاعات ہیں کہ برطانوی وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون نے ایڈورد سنوڈن کے ذریعے دی گئی خفیہ اطلاعات کی اشاعت کے متعلق اپنے ایک سینیئر افسر کوگارڈین اخبار سے رابطہ کرنے کو کہا تھا۔

سرکاری ذرائع نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ سر جیرمی ہیوؤد نے اخبار سے رابطہ کیا۔

برطانوی وزیراعظم کی جانب سے یہ قدم اس وقت اٹھایا گیا جب گارڈین نے برطانوی اور امریکی خفیہ نگرانی کے پروگرام کے متعلق تفصیل سے خبریں شائع کیں۔

اخبار کے ایڈیٹر الین رسبریجر نے کہا ہے کہ بعد میں انہیں کمپیوٹر کی اس ہارڈ ڈرائیو کو زبردستی تلف کرنے پر مجبور کیا گيا جس میں معلومات جمع تھیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ اس سلسلے میں ان کی بات چیت کافی سینیئر افسر سے ہوئی جو اس بات کا دعوی کر رہے تھے کہ وہ وزیراعظم کے خیالات کے نمائندہ ہیں تاہم انہوں نے اس افسر کا نام نہیں بتایا۔

اس دوران اخبار ’دی انڈیپینڈنٹ‘ اور ’ڈیلی میل‘ نے خبر دی ہے کہ کابینہ کے سکریٹری سر جریمی نے ہی گارڈین سے رابطہ کیا تھا۔

سیاسی امور کے بی بی سی کے نامہ نگار کرس میسن کا کہنا ہے کہ یہ خبریں صحیح ہیں۔

حکومتی ذرائع کا کہنا ہے کہ اس سلسلے میں گارڈین سے بات چيت نا کرنا ’پوری طرح سے اپنی ذمہ داریوں سے پہلو تہی ہوتی۔‘

حکومت کا موقف ہے کہ اسے اس بات کا خدشہ تھا کہ اخبار کے پاس جو خفیہ معلومات کا ڈیٹا ہے وہ غلط ہاتھوں میں پڑ جانے سے برطانیہ کے لیے خطرہ بن سکتا تھا۔

اخبار اور سرکاری حکام کے درمیان بات چيت وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون، نائب وزیراعظم نک کلیگ اور وزیر خارجہ ولیم ہیگ کی جانب سے خصوصی منظوری کے تحت ہوئی۔

اس بات چیت کے نتیجے میں ایڈیٹر رسبریجر وہ کرنے پر متفق ہوئے، جو بقول ان کے اخبار کی تاریخ میں ایک بد ترین واقعہ ہے۔

سنوڈن کے ذریعہ فراہم کردہ خفیہ معلومات جس کمپیوٹر کی ہارڈ ڈسک میں تھیں اس کو جی سی ایچ کیو کے دو سکیورٹی ماہرین کی نگرانی میں تلف کیا گيا۔

ایڈیٹر رسبریجر نے کہا ’ہم اس بات پر بلکل واضح تھے کہ مواد برطانوی حکومت کو واپس نہیں دینا ہے تو جی سی ایچ کیو کے انٹیلیجنس ماہرین کی نگرانی میں ہم نے خودی انہیں تلف کر دیا، جنہوں نے ہمیں یہ بھی بتایا کہ ہارڈ ڈسک کو کیسے خراب کرنا ہے۔‘

لیکن اخبار کا کہنا ہے اس سے متعلق فائیلوں کی کاپی پہلے ہی کر لی گئی تھی جس کی نقل موجود ہے اور اخبار سنوڈن کی سٹوری پر اپنا کام جاری رکھے گا لیکن یہ امریکہ سے ہوگا۔

گارڈین کے ایڈیٹر کا موقف ہے کہ اگر معلومات سے پر وہ ہارڈ ڈرائیو برطانوی حکومت کو دے دی جاتیں تو پھر یہ اخبار کے ذرائع کے ساتھ دھوکا ہوتا۔

اسی بارے میں