شام میں کارروائی پر بحث، مکین پوکر کھیلتے رہے

Image caption سب سے برا یہ ہوا کہ میں گیم میں ہزاروں ڈالر ہار گیا: جان مکین

امریکہ کے سابق صدارتی امیدوار اور سینیٹر جان مکین سینیٹ کی کمیٹی برائے خارجہ امور میں شام میں فوجی کارروائی سے متعلق مجوزہ قرارداد کی سماعت کے دوران اپنے موبائل فون پر پوکر گیم کھیلتے رہے۔

امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ پر تصویر کے ساتھ شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق ریپبلیکن جماعت کے سینیئر رہنما جان مکین جو شام میں فوجی مداخلت کے حمایتی ہیں، کمیٹی میں اس مسئلے پر بحث کے دوران اپنے آئی فون پر پوکر کھیل رہے تھے۔

جان مکین نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر طنزاً’سکینڈل‘ پر اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ بحث تین گھنٹے طویل تھی اور سب سے برا یہ ہوا کہ ’میں ہار گیا‘۔

جان مکین کی اس پوسٹ پر کئی لوگوں نے انہیں تنقید کا نشانہ بنایا۔

اخبار واشنگٹن پوسٹ کے مطابق فوٹوگرافر میلینا مارا نے مجوزہ قرارداد کی سماعت کے دوران جان مکین کو پوکر کھیلتے ہوئے دیکھا اور ان کی ایک تصویر لے لی۔

جان مکین نے امریکی ٹی وی چینل سی این این سے بات کرتے ہوئے کہا’میں ہمیشہ اپنے ساتھیوں کے بیانات پر پوری توجہ دینا پسند کرتا ہوں اور ساڑھے تین گھنٹے کی سماعت کے دوران کبھی کبھار اکتاہٹ کا شکار ہو جانے پر پوکر کا سہارا لیا۔‘

’لیکن سب سے بدترین یہ ہوا کہ میں اس گیم میں ہزاروں ڈالر ہار گیا لیکن یہ صرف’جعلی‘ کرنسی تھی‘۔

امریکی وزیر خارجہ جان کیری اور دیگر اعلیٰ حکام نے سینیٹ کی کمیٹی پر زور دیا کہ اب وقت ہے کہ شام کے خلاف کارروائی کی جائے کیونکہ انہیں یقین ہے گزشتہ ماہ دمشق کے مضافات میں ہونے والے کیمیائی حملے میں شامی حکومت ملوث ہے۔

جان مکین سال دو ہزار آٹھ کے صدارتی انتحابات میں براک اوباما کے مقابلے میں ریپبلکن پارٹی کے امیدوار تھے اور وہ خارجہ پالیسی اور فوجی معاملات میں بھی کھل کر بولتے ہیں۔

اسی بارے میں