چین: ساتویں صدی کے وزیرِاعظم کا مقبرہ

چین مقبرہ
Image caption 710 عیسوی میں محل میں بغاوت کے دوران انہیں ہلاک کر دیاگیا تھا۔

چینی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ. چین میں ایک خاتون سیاست دان کی قدیم قبر دریافت کر لی ہے، انہیں ملک کی ’خاتون وزیر اعظم‘ بتایاگیا ہے۔

شان گوان وانر کی قبر حال ہی میں شانکسی صوبے میں پائی گئی۔آثار قدیمہ کے ماہرین نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ یہ قبر اُنہی کی ہے۔

شان گوان وانر 664 میں پیدا ہوئی تھیں اور 710 میں ان کا انتقال ہوا۔ وہ ایک مشہور سیاستدان اور شاعر تھیں۔

تاہم رپورٹ کے مطابق قبر خاصی خراب حالت میں تھی۔

رپورٹ کے مطابق یہ قبر زیانگ ینگ صوبے میں ایک ہوائی اڈے کے قریب دریافت کی گئی ہے۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی شن ہوا کے مطابق خستہ حالت میں ملنے والے اس مقبرے پر لکھی عبارت سے اس بات کی تصدیق کرنے میں مدد ملی کہ یہ قبر شان گوان وانر کی ہے۔

ماہرین کا خیال ہے یہ ایک بہت بڑی اور اہم دریافت ہے۔

محکمہ آثارِ قدیمہ کے مطابق یہ مقبرہ بہت بُری حالت میں ہے اس کی چھت مکمل طور پر شکستہ ہے، چار دیواری ٹوٹی ہوئی ہے اور فرش پر تمام ٹائلیں اکھڑی ہوئی ہیں۔

محکمۂ آثارِ قدیمہ کے خیال میں مقبرے کو منظم طریقے سے نقصان پہنچایا گیا ہے۔

شان گوان وانر چین کی خوشحال سلطنت تانگ کے دوران ملکہ وو زیتیانگ کی قابل اعتماد ساتھی سمجھی تھیں۔ 710 عیسوی میں محل میں بغاوت کے دوران انہیں ہلاک کر دیاگیا تھا۔

شان گوان وانر کی زندگی کی کہانی پر چین میں ایک ٹی وی سیریز بھی بنائی گئی تھی۔

اسی بارے میں