کائے سونگ خصوصی اقتصادی زون کھول دیا گیا

Image caption کائے سونگ دونوں ممالک کے درمیان واحد فعال مشترکہ پروجکٹ ہے

شمالی اور جنوبی کوریا کے درمیان کائے سونگ اقتصادی زون کو جو اپریل میں بند کیا گیا تھا کھول دیا گیا ہے۔

دونوں ممالک نے گزشتہ ہفتے ایک سمجھوتے پر دستخط کیے تھے جس میں اس مشترکہ زون کو دوبارہ کھولنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔

اس خصوصی اقتصادی زون میں سو کے قریب جنوبی کوریائی فیکٹریاں ہیں جن میں پچاس ہزار کے قریب شمالی کوریائی باشندے ملازمت کرتے ہیں۔

یہ دونوں ممالک کے مابین آخری فعال مشترکہ پروجیکٹ ہے اور پیونگ یانگ کے لیے آمدنی کا اہم ذریعہ ہے۔

کائے سونگ اقتصادی زون کھولنے پر اتفاق

یاد رہے کہ اپریل کے مہینے میں شمالی کوریا نے بڑھتے ہوئے سیاسی تنازعات کے باعث اپنے ملازمین کو واپس بلا لیا تھا جس کی وجہ سے اس وقت سے وہاں کام بند ہے۔

جنوبی کوریا کی یونیفیکیشن وزارت نے گذشتہ مہینے کہا تھا کہ دونوں فریقین کے درمیان کائے سونگ اقتصادی زون کو دوبارہ کھولنے کے بارے میں ایک پانچ نکاتی معاہدے پر اتفاق ہوا تھا تاہم اب اس اقدام کے لیے تاریخ کا تعین کر دیا گیا ہے۔

خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق اس معاہدے میں کہا گیا تھا کہ ’جنوبی اور شمالی کوریا ملازمین کی واپسی کے نتیجے میں کائے سونگ اقتصادی کمپلکس کے بند ہو جانے جیسے واقعات کو پھر سے نہیں ہونے دیں گے۔‘

پیونگ یانگ نے اس زون سے اپریل کے مہینے میں اپنے 53 ہزار مزدوروں کو بظاہر اقوام متحدہ کے ذریعے لگائی گئي پابندی پر غصے کا اظہار کرتے ہوئے ہٹا لیا تھا۔

اس سال 12 فروری کو جب شمالی کوریا نے ایٹمی تجربہ کیا تو اس کے جنوبی کوریا کے ساتھ تعلقات کشیدہ ہو گئے تھے اور اقوام متحدہ نے اس پر بعض پابندیاں عائد کی تھیں۔

اسی بارے میں