لاکھوں یورو کا لاٹری ٹکٹ، مالک کی تلاش

Image caption اگر ٹکٹ کا مالک نہیں ملتا تو اس ٹکٹ کی انعامی رقم مینئل ریجا گونزالز کو ملے گی

سپین کے شہر لاکوریونہ میں ایک شخص کولاکھوں یورو کے انعام کا حامل لاٹری کا ایک ٹکٹ ملا ہے لیکن ان کا کہنا ہے کہ اگر وہ اس ٹکٹ کی انعامی رقم خود حاصل کرتا تو انھیں پر سکون نیند نہ آتی۔

مینئل ریجا گونزالز کو 47 لاکھ یورو کا ٹکٹ ملا لیکن وہ یہ ٹکٹ اس کے حقیقی مالک کو واپس کرنا چاہتے ہیں۔

اب ٹکٹ کے مالک اور حقیقی انعام جیتنے والے کی تلاش جاری ہے۔

انھوں نے بی بی سی کو بتایا: ’میں نے اس ٹکٹ کو اپنے پاس رکھنے کے بارے میں ایک لمحے کے لیے بھی نہیں سوچا کیونکہ میں رات کو مطمئن ضمیر کے ساتھ سونا چاہتا ہوں۔‘

اگر ٹکٹ کا مالک نہیں ملتا تو اس ٹکٹ کی انعامی رقم مینئل ریجا گونزالز کو ملے گی۔

حکام نے یہ بات افشا نہیں کی کہ 30 جولائی 2012 کو ہونے والی لاٹری کی قرعہ اندازی کا ٹکٹ شمال مغربی سپین کے شہر میں کب اور کہاں خریدا گیا تھا کیونکہ وہ چاہتے ہیں کہ اس ٹکٹ پر دعویٰ کرنے والوں کی تصدیق کی جا سکے۔

مقامی میڈیا کے مطابق ریجا گونزالز کے بھائی، والد اور داد سپین میں اس لاٹری کے کمپنی کے لیے کام کرتے تھے۔

انھوں نے کہا کہ انھیں اس شخص کے ساتھ ہمدردی ہے جس سے یہ ٹکٹ گم ہوا ہے۔

گونزالز نے بی بی سی ورلڈ سروس کے پروگرام نیوز ڈے کو بتایا کہ ’ایک شخص اپنا ٹکٹ بھول گیا۔ میں نے ان کی جگہ اپنے آپ کو لا کھڑا کیا۔ ایسا تو میرے ساتھ بھی ہو سکتا تھا۔میں نے سوچا کہ ٹکٹ حقیقی مالک کو واپس کرنا بہتر ہے۔‘

انھوں نے کہا کہ اگر اس ٹکٹ کا مالک مل جائے تو انھیں بڑی خوشی ہوگی۔ ٹکٹ کے حقیقی مالک کی تلاش دو سال تک جاری رہ سکتی ہے۔

اب شہر کی ویب سائٹ پر گمشدہ چیزوں کے بارے میں خانے میں ٹکٹ کا اشتہار شائع کیا گیا ہے۔ اس خانے میں اکثر موبائل فون، گھڑیوں، چابیوں اور بٹووں کی گمشدگی کے بارے میں نوٹس دیے جاتے ہیں۔

اسی بارے میں