جرمنی: حکومت سازی کے لیے مزاکرات

Image caption سی ڈی یو نے اتوار کو ہونے والے انتخابات میں 41.5 فیصد حاصل کیے تھے

جرمنی کی سوشل ڈیموکریٹک پارٹی نے کہا ہے کہ وہ دو مرتبہ ملک کی چانسلر رہنے والی انگیلا میرکل کی جماعت کرسچین ڈیموکریٹس یونین کے ساتھ مخلوط حکومت بنانے کے لیے مزاکرات شروع کرے گی۔

انگیلا میرکل کی جماعت کرسچین ڈیموکریٹس یونین (سی ڈی یو) نے گزشتہ ہفتے ہونے والے انتخابات جیتے تھے لیکن وہ معمولی فرق سے سادہ اکثریت حاصل نہیں کر سکی تھی۔

خیال رہے کہ سی ڈی یو کو پارلیمان میں اکثریت حاصل کرنے کے لیے سوشل ڈیموکریٹک پارٹی (ایس ڈی پی) یا دی گرینز سے اتحاد کرنا پڑے گا۔

ایس ڈی پی کے چیئرمین سگمار گیبرئیل کا کہنا ہے کہ ان کی جماعت کے دیگر ارکان نے ایک اجلاس میں اس تجویز کی حمایت کی ہے۔

سی ڈی یو نے اتوار کو ہونے والے انتخابات میں 41.5 فیصد، ایس پی ڈی نے 26 فیصد، دی گرینز نے 8.4 فیصد اور سابقہ کیمونسٹ جماعت لیفٹ پارٹی نے 8.6 فیصد ووٹ حاصل کیے تھے۔

دوسری جانب جرمنی کی خبر رساں ادارے ڈی پی اے کا کہنا ہے کہ ایس پی ڈی کے رہنما پیر سٹین برویک فرنٹ لائن کی سیاست کو خیر آباد کہنا چاہتے ہیں۔

ایس ڈی پی کے ایک ذریعہ نے خبر رساں ادارے ڈی پی اے کو بتایا کہ چھاسٹھ سالہ سٹین برویک اب جماعت میں کوئی عہدہ نہیں لینا چاہتے۔

اطلاعات کے مطابق سٹین برویک نے برلن میں ایس پی ڈی کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ان کی سیاسی زندگی ختم ہونے کا وقت قریب آ گیا ہے۔

ادھر انگیلا میرکل نے ابھی اس بات کا کوئی اشارہ نہیں یا کہ وہ مخلوط حکومت بنانے کے لیے کس جماعت سے مزاکرات کریں گی۔

اسی بارے میں