امریکہ میں مالیاتی بل پر تعطل، ایشیائی بازار متاثر

Image caption جاپان، ہانگ کانگ، آسٹریلیا اور جنوبی کوریا کے سٹاک انڈکسز میں گراوٹ دیکھی جا رہی ہے

امریکہ میں مالیاتی بل پر تعطل کے باعث حکومت کی جانب سے عوامی شعبے میں سرکاری خدمات بند کیے جانے کے خدشے کے پیشِ نظر ایشیائی ممالک کے بازاروں میں گراوٹ درج کی گئی ہے۔

واضح رہے کہ پیر کو نصف شب تک رواں مالی سال کے اختتام پر امریکہ کو اخراجات یا صرف کے لیے ایک نئے بل کی منظوری کی ضرورت ہے۔ لیکن سیاسی اختلافات کی وجہ سے اس بل پر کارروائی تعطل کا شکار ہے۔

عالمی بازار میں یہ خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ اگر یہ بل منظور نہ ہو سکا تو اس کے معاشی اثرات مرتب ہونگے اور اس کے نتیجے میں غیر لازمی وفاقی خدمات کو بند کرنا پڑے گا اور اسٹاف کو بے معاوضہ چھٹیوں پر روانہ کیا جا سکتا ہے۔

جاپان، ہانگ کانگ، آسٹریلیا اور جنوبی کوریا کے سٹاک انڈکسز میں گراوٹ دیکھی جا رہی ہے۔

جاپان کے نکی 225 انڈکس میں 2.2 فی صد کی گراوٹ درج کی گئی ہے۔ دوسری جانب ہانگ کانگ کے ہانگ سینگ اور آسٹریلیا کے اے ایس ایکس میں 1.3 فی صد کی گراوٹ درج کی گئي ہے جبکہ جنوبی کوریا کے کوسپی میں 0.7 فیصد کی کمی واقع ہوئی ہے۔

واضح رہے کہ یہ پیر کی شروعاتی رجحانات ہیں۔

مالی معاملات کی ویب سائٹ موٹلے فول کے ڈیوڈ کیو کا کہنا ہے کہ ’یہ کسی انجان چیز کا خوف ہے۔ کسی کو نہیں معلوم کہ کیا ہونے والا ہے اور بازار کو غیر یقینی صورتِ حال پسند نہیں آتا۔‘

انھوں نے مزید کہا کہ ’امریکہ کے سرکاری اخراجات میں کچھ کمی کی توقع کی جا رہی ہے لیکن ہمیں اس بات کا علم نہیں کہ اس کٹوتی سے کون سے شعبے متاثر ہو رہے ہیں۔‘

انھوں نے کہا کہ ’جب تک یہ مسئلہ حل نہیں ہو جاتا بازار میں عدم استحکام کا خدشہ رہے گا۔‘

اسی بارے میں