بزرگوں کے لیے بدترین ممالک، پاکستان کا تیسرا نمبر

Image caption اس رپورٹ کی تشکیل کے لیے دنیا کے اکانوے ممالک میں بزرگوں کے معیار زندگی کا جائزہ لیا گیا

ایک برطانوی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ بزرگوں کے معیارِ زندگی کے حوالے سے بہترین ملک سویڈن ہے جبکہ پاکستان بدترین ممالک کی فہرست میں تیسرے نمبر پر ہے۔

یہ رپورٹ اقوام متحدہ کی مدد سے برطانیہ کی ساؤتھ ہیمپٹن یونیورسٹی نے تیار کی ہے۔

دنیا میں پہلی بار بزرگوں کے معیار زندگی بہتر بنانے اور انہیں دی گئی سہولتوں کا تعین کرنے کے حوالے سے ایک رپورٹ جاری کی گئی ہے۔

اس رپورٹ کو تشکیل دینے والوں میں بزرگوں کے لیے کام کرنے والی عالمی تنظیم ہیلپ ایج انٹرنیشنل کے ایک پروفیسر بھی شامل ہیں۔

اس رپورٹ کی تشکیل کے لیے دنیا کے 91 ممالک میں بزرگوں کے معیارِ زندگی کا جائزہ لیا گیا۔ اس جائزے میں بزرگوں کی صحت اور انہیں معاشرے میں دیے گئے دوستانہ پہلوؤں پر غور کیا گیا۔

اس رپورٹ کے مطابق سویڈن بزرگوں کی رہائش کے لیے موزوں ترین ملک قرار پایا ہے جب کہ افعانستان بزرگوں کے لیے بدترین ملک ہے۔

اس رپورٹ کے مطابق بدترین ممالک میں پاکستان 89 ویں نمبر پر ہے جبکہ بھارت کا نمبر 73واں ہے۔

بہترین ممالک میں سویڈن کے بعد امریکہ آٹھویں نمبر پر اور برطانیہ 13ویں نمبر پر ہے۔

رپورٹ کے مطابق پاکستان میں 50 سال سے زیادہ عمر کے 42 فیصد لوگوں کا کہنا ہے کہ ان کو یقین ہے کہ مشکل پڑنے پر ان کے رشتہ دار مدد کریں گے۔

تاہم اسی عمر کے صرف 41 فیصد کا کہنا ہے کہ وہ اپنے علاقے میں رات کو اکیلے پیدل چلتے ہوئے اپنے آپ کو محفوظ تصور نہیں کرتے۔