دفاع میں ناکامی پر دو امریکی جرنیل ریٹائر

Image caption دو امریکی فوجیوں کو افغانستان میں طالبان حملے پرسرزنش کے نتیجے میں عہدے سے سبکدوش ہونے کے لیے کہا گيا ہے

امریکی میرین کور کے سربراہ نے افغانستان میں فوجی اڈے کے دفاع میں ناکامی پر دو امریکی جرنیلوں کی ریٹائرمنٹ کا حکم جاری کیا ہے۔

میجر جنرل چارلس گرگانوس اور میجر جنرل گریگ سٹرڈیوینٹ پر الزام تھا کہ انہوں نے 2012 میں طالبان کے حملے کے دوران کیمپ بیسچن میں مناسب دفاعی اقدامات نہیں کیے۔

اس حملے میں دو امریکی فوجی ہلاک اور آٹھ دیگر افراد زخمی ہوئے تھے جب کہ طالبان نے چھ امریکی جنگی طیاروں کو تباہ کر دیا تھا اور متعدد کو شدید نقصان پہنچایا تھا۔

جوابی کارروائی میں امریکی اور برطانوی فوجیوں نے 15 میں سے 14 حملہ آوروں کو ہلاک اور ایک کو گرفتار کر لیا تھا۔

جون کے مہینے میں میرین کور کے سربراہ جنرل جیمز ایمس نے امریکی سنٹرل کمانڈ کو اس معاملے میں تفتیش کا حکم دیا تھا اور اب ان کا کہنا ہے کہ تحقیقات کے نتائج کی روشنی میں انہوں نے دونوں جرنیلوں کے خلاف یہ قدم اٹھایا۔

تحقیقاتی رپورٹ کے نتائج کی توثیق کرتے ہوئے جنرل ایمس نے لکھا: ’مجھے افغانستان میں فوجیوں کی دشواریوں کا احساس ہے تاہم میری ذمہ داریاں مجھ سے یہ امید رکھتی ہیں کہ میں اپنی کمان کی ذمہ داریوں اور جوابدہی پر صادق رہوں۔‘

انھوں نے مزید کہا کہ ’جنرل گرگانوس اپنے زیر کمان فوجیوں اور ساز و سامان کے حتمی ذمہ دار تھے اور ان سے فیصلہ کرنے میں غلطی ہوئی کیونکہ انھوں نے ہلمند میں بیسچن کیمپ کے علاقے میں طالبان کے خطرے کی شدت کو سمجھ نہیں سکے۔‘

جنرل ایمس نے یہ بھی کہا کہ اس علاقے میں میرین فضائیہ کے ذمہ دار جنرل سٹرڈیوانٹ نے ’مناسب طور پر فوج کی حفاظت کا تجزیہ نہیں کیا۔‘

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق جنرل ایمس نے سوموار کو دونوں جرنیلوں سے ریٹائر ہونے کے لیے کہا۔ انہوں نے پینٹاگون میں جنرل گرگانوس سے ذاتی طور پر اور جنرل سٹرڈیوانٹ سے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے بات کی۔

اطلاعات کے مطابق دونوں فوجی جرنیلوں نے اس پیشکش کو قبول کر لیا ہے۔

جنرل ایمس نے بحریہ کے امور کے وزیر سے یہ سفارش بھی کی ہے کہ جنرل گرگانوس کی ترقی کے لیے کی گئی نامزدگی واپس لے لی جائے اور جنرل سٹرڈیوانٹ کو سرزنش کا خط بھیجا جائے۔

نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ امریکی فوج کے اعلیٰ افسران کی سر عام سرزنش کا یہ واقعہ اپنے آپ میں مثال ہے۔

اس اعلان کے بعد جنرل گرگانوس نے ایک مختصر بیان جاری کیا کہ وہ میرین کور میں 37 سال تک کام کرنے کے لیے خود کو خوش قسمت سمجھتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ’میں اس کی ہمیشہ یاد کرتا رہوں گا۔ مجھے اپنی کور کی قیات پر مکمل یقین اور اعتماد ہے اور ہم اپنے کمانڈنٹ کے فیصلوں کا پوری طرح سے احترام کرتے ہیں۔‘

یاد رہے کہ بیسچن کیمپ افغانستان کے سب سے بڑے فوجی اڈوں میں سے ایک ہے اور یہ 37 کلومیٹر پر پھیلا ہوا ہے۔

اسی بارے میں