امریکہ:جے پی مورگن کو 13 ارب ڈالر کا جرمانہ

Image caption حالیہ دنوں میں جی پی مورگن کو قانونی پریشانیوں کا سامنا رہا ہے

امریکہ میں ذرائع ابلاغ کے مطابق بینکنگ شعبے کی معروف ترین کمپنی جے پی مورگن پر 13 ارب ڈالر کا ریکارڈ جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔

امریکی میڈیا میں شائع خبروں کے مطابق قرض کی ضمانت کے معاملے کی تحقیقات کے بعد جے پی مارگن پر یہ جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق اس معاملے میں امریکی محکمۂ انصاف کے سینیئر حکام کے ساتھ ہونے والی بات چیت کے دوران اس معاملے میں عارضی یا وقتی معاہدہ ہوا ہے۔

جے پی مورگن بینک پر بانوے کروڑ ڈالر جرمانہ

اس سے قبل قرضوں کی ضمانت میں اصل قیمت سے زیادہ قیمت پر فروخت کو سنہ 2007 میں امریکہ میں بینکاری کے نظام کو تباہی کے دہانے تک پہنچانے کا ذمہ دار قرار دیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ جے پی مورگن پر گزشتہ ماہ ایک علیحدہ معاملے میں تقریباً ایک ارب امریکی ڈالر کا جرمانہ عائد کیا گیا تھا۔

وال سٹريٹ جرنل نے باخبر ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ جمعہ کو جے پی مورگن کے وکلاء اور امریکہ کے اٹارنی جنرل ایرک ہولڈر اور ان کے نائب ٹونی ویسٹ کے درمیان ہوئی بات چیت کے بعد امریکی محکمۂ انصاف عارضی طور پر اس نتیجے پر پہنچا کہ کمپنی اس سے عہدہ برآ ہونے کے لیے 13 ارب امریکی ڈالر کی خطیر رقم ادا کرے۔

نیویارک ٹائمز نے بھی یہ خبر دی ہے کہ سرمایہ کار بینک کسی معاہدے کے قریب ہے لیکن ابھی معاہدے کی جزیات پر بات چیت جاری ہے۔

اس کی تصدیق کے لیے نہ تو محکمہ انصاف اور نہ ہی بینک نے کوئی تبصرہ کیا ہے۔

اگر اس بات پر اتفاق ہو جاتا ہے تو یہ کسی بھی امریکی کمپنی کی طرف سے اپنے انداز کی ادا کی جانے والی سب سے بڑی رقم ہوگی۔

اس 13 ارب امریکی ڈالر میں سے نو ارب امریکی ڈالر تو جرمانے کی رقم ہوگی باقی چار ارب امریکی ڈالر خسارے سے نبرد آزما مکان مالکان کی ریلیف کے لیے ہوں گے۔

واضح رہے کہ گزشتہ مالی بحران کے دور میں بہت سے سرمایہ کار بینکوں نے بازار میں قرضوں کی ضمانت پر مبنی سکیوریٹیز اور بانڈز کی پیشکش کی تھی۔

بی بی سی کے بزنس نامہ نگار جو لینام کا کہنا ہے کہ ان خصوصی بانڈز میں سرمایہ کاری کے مخلوط پیکجز تھے جن میں سب سے پرکشش پیشکش کسی بھی خطرے سے رہائشی مکان کے لیے قرض تھے۔

جے پی مورگن پر یہ الزام ہے کہ اس نے اس میں شامل خسارے کے باوجود گروی پر مبنی سیکیوریٹیز کی فروخت دانستہ طور پر خطرے سے پاک مکانات کے لیے قرضوں کی بنیاد پر کی۔

حالیہ دنوں میں جی پی مورگن کو قانونی پریشانیوں کا سامنا رہا ہے۔

کبھی یہ واشنگٹن اور وال سٹریٹ کی پسندیدہ بینکنگ کمپنی ہوا کرتی تھی لیکن گزشتہ ہفتے اس نے اپنی سہ ماہی آمدنی میں خسارہ ظاہر کیا ہے جو کہ اپنے آپ میں ایک غیر معمولی بات ہے۔ اطلاعات کے مطابق یہ خسارے ان کے قانونی اخراجات کے نتیجے میں ہوئے جو کہ کل نو اعشاریہ دو ارب امریکی ڈالر تھے۔

اسی بارے میں