پھنسا ہوا بوئنگ ’ڈریم لفٹر‘ اڑنے میں کامیاب

Image caption یہ بوئنگ کے مشہور طیارے بوئنگ 747 کی تبدیل شدہ شکل ہے

امریکی طیارہ ساز کمپنی بوئنگ کے ’747 ڈریم لفٹر‘ کے پائلٹ نے طیارے کو اسے اصل منزل پر اتارنے کی بجائے غلطی سے ایک غلط اور چھوٹے ہوائی اڈے پر اتار لیا۔

اس کے بعد بوئنگ کے ماہرین کے لیے سوال تھا کہ اب یہ قوی ہیکل جہاز اس چھوٹے سے ہوائی اڈے سے اڑے گا کیسے؟

بوئنگ کے حکام نے اس جہاز کو موڑنے کے لیے طاقتور مشین بھجوائی جس نے اس بھاری بھرکم جہاز کو اس تنگ اور چھوٹے ہوائی اڈے پر موڑا۔

بوئنگ ڈریم لائنر کو مکمل وزن کے ساتھ عموماً 2780 میٹر لمبا رن وے درکار ہوتا ہے مگر جس ہوائی اڈے پر بوئنگ طیارہ غلطی سے اترا اس کے رن وے کی لمبائی 1860 میٹر ہے۔

اس طیارے کے انجینئرز نے تمام تر اعداد و شمار کو اکٹھا کر کے اور حالات اور واقعات کو مدنظر رکھ کے اسے اڑانے کا فیصلہ کیا اور طیارہ کامیابی سے فضا میں بلند ہونے میں کامیاب ہوگیا۔

جہاز کو رن وے کے آخر تک لیجا کر اس قابل بنایا گیا کہ وہ پورا رن وے استعمال کر سکے اور رن وے کے آخری حصے تک کو اڑان سے پہلے استعمال کیا گیا۔

اس طیارے کو بوئنگ کے مختلف جہازوں کے پرزے دنیا بھر میں قائم بوئنگ کی فیکٹریوں سے امریکہ لانے اور امریکہ میں ایک جگہ سے دوسری جگہ لیجانے کے لیے استمعال کیا جاتا ہے۔

یہ بوئنگ کے مشہور طیارے بوئنگ 747 کی تبدیل شدہ شکل ہے جس کے درمیانی حصے کو بڑا کر کے اس میں سامان کے لیے جگہ بنائی گئی۔

اسی بارے میں