امریکہ: 10 لاکھ بے روز گار افراد کی مالی امداد ’بند‘

Image caption یہ پروگرام ان امریکی شہریوں کے لیے شروع کیا تھا جن کی مالی بحران کے دوران ملازمت چلی گئی تھی

امریکہ میں وفاقی ہنگامی پروگرام کی معیاد سنیچر کو ختم ہونے کے بعد دس لاکھ سے زیادہ بے روز گار افراد مالی امداد سے محروم ہو جائیں گے۔

امریکی کانگریس کی موسم سرما کی تعطیلات سے پہلے اراکین بے روزگاروں کو دی جانے والی مالی مراعات کے پروگرام میں توسیع کے کسی سمجھوتے پر نہیں پہنچ سکے۔

امریکہ کے سابق صدر جارج ڈبلیو بش نے یہ پروگرام سال 2008 میں مالی بحران کے آغاز پر شروع کیا تھا۔

اس پروگرام کے تحت بے روزگار افراد کو ماہانہ 1166 ڈالر 73 ہفتوں تک ادا کیے جاتے تھے۔

وائٹ ہاؤس کا کہنا ہے کہ اس سہولت کے نتیجے میں لاکھوں خاندانوں کو غربت سے نکالنے میں مدد ملی لیکن حزب اختلاف کی جماعت ریپبلکن کا کہنا ہے کہ اس سکیم پر 25 ارب ڈالر کے اخراجات بہت زیادہ ہیں۔

یہ تعطل بجٹ پر تنازعے کے تقریباً دو ماہ بعد سامنے آیا ہے۔ اس تنازعے کے نتیجے میں وفاقی حکومت کو جزوی طور پر اپنا کام بند کرنا پڑا تھا۔ اس وقت حزبِ اختلاف کی اکثریت والے ایوانِ نمائندگان سے آئندہ مالی سال کا بجٹ منظور کرنے سے انکار کر دیا تھا۔

امریکی صدر براک اوباما نے کانگریس کے جنوری میں دوبارہ اجلاس کے موقع پر اس پروگرام میں ہنگامی بنیادوں پر توسیع کرنے کا عزم کیا ہے۔

وائٹ ہاؤس کے ترجمان جوز ارنسٹ کے مطابق صدر کا کہنا ہے کہ انتظامیہ کو جیسا کہ کئی ہفتوں سے ہو رہا ہے، کانگریس پر دباؤ ڈالنا ہو گا کہ وہ اس پر فوراً عمل کریں اور دو جماعتی نظریے کی بنیاد پر اس معاملے کو معاشی ترجیحات کے طور پر حل کرے۔

حکام کے مطابق اس پروگرام کی معیاد ختم ہونے سے تقریباً تیرہ لاکھ افراد کو اس پروگرام کے تحت ملنے والی رقم رک جائے گی۔

اس کے علاوہ آئندہ سال لاکھوں افراد ریاستوں کی جانب سے ملنے والی مالی امداد سے محروم ہو جائے گے کیونکہ آئندہ چھ ماہ کے دوران کئی ریاستوں میں بھی اس پروگرام کی معیاد ختم ہو جائے گی۔

یہ پروگرام ان امریکی شہریوں کے لیے شروع کیا گیا تھا جن کی مالی بحران کے دوران ملازمت چلی گئی تھی۔

امریکہ میں گذشتہ ماہ نومبر میں بے روزگاری کی شرح سات فیصد تھی جوگذشتہ پانچ سال کے دوران کم ترین سطح تھی۔

لیکن طویل عرصے تک بے روزگار رہنا ملکی معیشت کے لیے ایک اب بھی ایک بڑا مسئلہ ہے جس میں 41 لاکھ امریکی چھ ماہ یا اس سے زائد عرصے سے بے روزگار ہیں۔

امریکہ میں حکمران جماعت ڈیموکریٹ کی ایوان نمائندگان میں اکثریتی جماعت ریپبکن سے کئی بار مختلف معاملات سیاسی رسہ کشی ہو چکی ہے۔ رواں سال اکتوبر میں وفاقی حکومت کی سرگرمیاں بحال کرنے کے لیے قرضوں کی حد میں اضافے کے تنازعے پر کئی دنوں بعد اتفاقِ رائے ہو سکا تھا۔

اسی بارے میں