روس کے لیے امریکی آلوؤں کا تحفہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption جان کیری نے کہا کہ اس تحفے کے پیچھے کوئی پوشیدہ معنی نہیں ہیں

امریکہ کے وزیرِ خارجہ جان کیری نے اپنے روسی ہم منصب سرگے لاوروف کو تحفے کے طور پر امریکی ریاست آئڈہو کے دو آلو دیے ہیں۔

جان کیری نے بتایا کہ جب وہ آخری بار روسی وزیرِ خارجہ سے پیرس میں ملے تھے تو انہوں نے آئڈہو کی معروف ترین برآمد کا ذکر کیا تھا۔

روسی وزیرِ خارجہ نے اس تحفے پر ان کا شکریہ ادا کیا ہے اور کہا ہے کہ اس تحفے سے وہ متاثر ہوئے ہیں۔

دونوں وزرا 22 جنوری کو شام کے معاملے پر ہونے والی امن کانفرنس کے سلسلے میں فرانس میں مذاکرات کر رہے ہیں۔ اس سلسلے میں مقامی اور علاقائی سطح پر فائر بندی کے معاہدے زیرِ غور ہیں۔

گذشتہ چند ماہ میں ماسکو اور واشنگٹن کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔ اس کی وجہ این ایس اے کے سابق اہل کار ایڈورڈ سنوڈن کی جانب سے افشا کیے گئے راز ہیں۔ ایڈورڈ سنوڈن کوروس میں عبوری طور پر پناہ دی گئی ہے۔

سرگے لاوروف نے کہا کہ تحفے کے یہ آلو شام کے سلسلے میں مذاکرات سے پہلے علامتی کردار ادا کر سکتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ جان کیری نے مجھے جو مخصوص آلو دیے ہیں ان کی شکل گاجر سے بھی ملتی ہے اسی لیے انھیں کہاوت ’کیرٹ اینڈ سٹک‘ میں بطور متبادل بھی استعمال کیا جا سکتا ہے۔

جان کیری نے کہا کہ اس تحفے کے پیچھے کوئی پوشیدہ معنی نہیں ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ’کرسمس کی چھٹیوں کے دوران ہم آئڈہو کے بارے میں بات کر رہے تھے اور انھوں نے مجھے بتایا کہ وہ آئڈہو کے مشہور آلوؤں کے بارے میں جانتے ہیں۔ میں نے سوچا کہ کیوں نہ میں ان کے لیے یہ آلو بطور تحفہ لے جاؤں۔‘

تحفے کے جواب میں روسی وزیرِ خارجہ نے امریکہ کے دفترِ خارجہ کی ترجمان جین ساکی کے لیے گلابی رنگ کی ٹوپی دی۔

اسی بارے میں