ایئر بس A320 کی پیداوار میں اضافہ

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ایئر بس A320 طیاروں میںA318, A319 A320 اور A321 طیارے شامل ہیں جنھیں ہوائی کمپنیاں مختصر سے درمیانی مسافت یا ’شارٹ ٹو میڈیم ہال‘ کے لیے استعمال کرتی ہیں

دنیا کی بڑی طیارہ ساز کمپنیوں میں سے ایک ایئربس نے اعلان کیا ہے کہ وہ اپنے مختصر سے درمیانی مسافت تک پرواز کرنے والے طیاروں کی پیدوار بڑھائے گا۔

ایئر بس کے ’شارٹ ہال‘ یا مختصر سے درمیانی مسافت تک پرواز کرنے والے طیاروں کی سیریز کو A320 کہا جاتا ہے جس میں چار مختلف طیارے شامل ہیں جن کی تقسیم ان میں موجود نشستوں اور چند دوسری تبدیلیوں کی بنا پر کی جاتی ہے۔

ایئر بس نے اعلان کیا ہے کہ اس نے 2013 کے دوران ریکارڈ 626 طیارے فروخت کیے جس کے دوران اس کی خالص آمدن 21 فیصد بڑھ کر تین ارب 60 کروڑ یورو ہو گئی جبکہ کل آمدن پانچ فیصد بڑھ کر 59 ارب 30 کروڑ یورو ہو گئی۔

یورپی طیارہ ساز کمپنی نے یہ بھی اعلان کیا کہ وہ 2014 میں بھی اتنے ہی طیارہ فراہم کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

اعلان کے مطابق ایئر بس 2016 سے A320 کے طیاروں کی پیداوار میں ماہانہ چار مزید طیاروں کا اضافہ کرے گی جو فی الحال 42 طیارے فی مہینہ ہیں۔

ایئر بس A320 طیاروں میں A318, A319, A320 اور A321 طیارے شامل ہیں جنھیں ہوائی کمپنیاں مختصر سے درمیانی مسافت یا ’شارٹ ہال‘ کے لیے استعمال کرتی ہیں۔

ایئر بس کے ٹام ولیمز نے کہا کہ ’ہمارے سب سے زیادہ فروخت ہونے والے A320 قسم کے طیاروں کی مانگ اور پیداوار کے نظام کو دیکھتے ہوئے ہم 2016 کی دوسری سہ ماہی سے 46 طیارے فی مہینہ تیار کرنے کے قابل ہو جائیں گے۔‘

اس خاندان کے طیاروں کے اب تک 4200 آرڈر بُک ہو چکے ہیں جنہیں ایئر بس نے تیار کر کے فراہم کرنا ہے۔ اس کی بنیاد پر ٹوم ولیمز نے کہا: ’ہمارے پاس ٹھوس وجہ ہے کہ ہم ماہانہ پیداوار بڑھائیں اور اپنے صارفین کی بہتر ایندھن استعمال کرنے والے طیاروں کی مانگ پوری کریں۔‘

ایئر بس نے یہ بھی اعلان کیا کہ وہ اپنا نیا طیارہ A350 اس سال کے آخر میں قطر ایئر ویز کے سپرد کر دے گا۔

ایئر بس کی حریف کمپنی امریکی طیارہ ساز بوئنگ ہے جس نے توقع ظاہر کی ہے کہ وہ اس سال 715 سے 725 طیارے فراہم کرے گی۔ یہ تعداد 2013 کی نسبت دس فیصد زیادہ ہو گی۔

اسی بارے میں