یو اے ای میں پاکستانی شہری کو موت کی سزا

Image caption متحدہ عرب امارت میں مجرموں کو پھانسی پر لٹکانے کے واقعات انتہائی کم ہیں

متحدہ عرب امارت میں ایک عدالت نے ایک پاکستانی شہری کو ملک میں چار کلو گرام ہیروئن سمگل کرنے کے الزام میں موت کی سزا سنائی ہے۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق اس تیس سالہ پاکستانی شہری کا نام ظاہر نہیں کیاگیا ہے۔

متحدہ عرب امارت کے ذرائع ابلاغ میں اس پاکستانی شخص کو ’ڈبلیو اے‘ کے طور پر متعارف کرایا گیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق اس شخص کو ایک خفیہ آپریشن میں گرفتار کیاگیا ہے۔ خفیہ پولیس کے ایک اہلکار نے اپنے آپ کو گاہک ظاہر کر کے ایک لاکھ درہم کے عوض تمام منشیات کو خریدنے کی پیشکش کی۔

گلف نیوز کے مطابق اس شخص کو منشیات رکھنے اور منشیات لانے کے الزام میں موت کی سزا دی گئی ہے۔

عدالت کو بتایاگیا کہ اس پاکستانی شہری نے جسم پر پٹیاں باندھ کر ہیروئن سمگل کی۔

پاکستانی شہری اپنی سزا کو پندرہ روز کے اندر چیلنج کر سکتا ہے۔

متحدہ عرب امارت میں مجرموں کو پھانسی پر لٹکانے کے واقعات انتہائی کم ہیں اور اکثر اوقات موت کی سزا کو عمر قید میں تبدیل کر دیا جاتا ہے۔

اسی بارے میں