’شاہی خاندان کے فون نمبر شہزادی ڈیانا نے فراہم کیے‘

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption کلائیو گڈمین کے مطابق شہزادی ڈیانا چاہتی تھیں کہ وہ اس خفیہ کتاب کو دیکھیں

برطانوی اخبار ’دی نیوز آف دی ورلڈ‘ کے سابق مدیر برائے شاہی امور نے عدالت کو بتایا ہے کہ آنجہانی شہزادی ڈیانا نے انھیں شاہی خاندان کے ارکان کے فون نمبروں پر مبنی کتاب فراہم کی تھی۔

کلائیوگڈمین نے لندن میں عدالت کو بتایا کہ انھیں یہ کتاب 1992 میں ملی تھی جب شہزادی اپنے شوہر کا مقابلہ کرنے کے لیے برطانوی پریس میں ایک ’اتحادی‘ کی تلاش میں تھیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ’وہ (شہزادی ڈیانا) چاہتی تھیں کہ میں اسے دیکھوں‘۔

اس سوال پر کہ شہزادی ڈیانا نے انھیں یہ فون ڈائریکٹری کیوں بھیجی کلائیو گڈمین نے کہا کہ ’اس وقت پرنس آف ویلز (شہزادہ چارلس) سے ان کے تعلقات بہت خراب ہو چکے تھے۔ انھیں لگتا تھا کہ ان کے آس پاس موجود لوگ ان پر دباؤ ڈال رہے ہیں اور وہ ان کا مقابلہ کرنے کا ارادہ رکھتی تھیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption 56 سالہ کلائیوگڈمین کو 2000 میں اخبار کا رائل ایڈیٹر مقرر کیا گیا تھا

خیال رہے کہ 56 سالہ کلائیوگڈمین کو 2000 میں اخبار کا رائل ایڈیٹر مقرر کیا گیا تھا۔

انھیں2007 میں فون ہیکنگ کے معاملے میں جیل جانا پڑا تھا اور بعدازں انھیں نوکری سے بھی برخاست کر دیا گیا تھا۔

انھوں نے عدالت میں خود پر لگائے گئے اس الزام کو مسترد کیا کہ انھوں نے پولیس افسران کو رقم دے کر ’گرین بکس‘ کے نام سے معروف شاہی خاندان کی خفیہ فون ڈائریکٹری حاصل کی تھی۔

کلائیو گڈمین نے اپنے وکیل کے سوال پر عدالت کو بتایا کہ انھوں نےگرین بکس سے حاصل ہونے والی معلومات کو کبھی بھی ہیکنگ کے لیے استعمال نہیں کیا۔

عدالت کو یہ بھی بتایا گیا کہ ’دی نیوز آف دی ورلڈ‘ کی مالک کمپنی نیوز انٹرنیشنل نے گڈمین کو برخاست کرتے ہوئے ایک لاکھ 40 ہزار پاؤنڈ بھی ادا کیے تھے جو کہ ان کی ڈیڑھ سال کی تنخواہ کے برابر رقم تھی۔

اسی بارے میں