روس کا کرائمیا میں فضائیہ کے اڈّے پر قبضہ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption اڈے پر قبضے کے بعد بھاری ہتھیاروں سے لیس روسی فوجیوں نے اڈّے پر موجود یوکرینی فوجیوں سے ہتھیار ڈالنے کا مطالبہ بھی کیا

کرائمیا میں یوکرین کی فضائیہ کےاڈّے پر روسی فوجیوں کی کارروائی کے دوران فائرنگ اور دھماکوں کی آواز سنائی دی گئی ہے۔ اطلاعات کے مطابق اس کارروائی میں میں کم از کم ایک شخص زخمی ہوا ہے۔

مقامی ذرائع کے مطابق سواستپول کا بلبیک نامی فضائیہ کا اڈہ اب روس کے قبضے میں ہے۔

اس سے قبل مغربی کرائمیا میں نووہ فروروکا میں سینکڑوں غیر مسلح مظاہرین نے یوکرین کی بحریہ کے ایک اڈے پر قبضہ کر لیا تھا۔

روس حامی مسلح گروہ یوکرین کی بحریہ کے جہاز بھی اپنے قبضے میں لیتے رہے ہیں۔

کرائمیا میں بی بی سی نامہ نگار ایئن پینل کا کہنا ہے کہ یوکرینی فوجی ایسا محسوس کر رہے ہیں کہ جزیرہ نما کرائمیا کو ان کے فوجی افسران نے ان کے حال پر چھوڑ دیا ہے۔

جمعے کے روز روس کے صدر ولادیمیر پوتن نے امریکہ اور یورپی یونین کی طرف سے پابندیوں کے باوجود ایک قانون پر دستخط کیے جس کے تحت کرائمیا کو رسمی طور پر روس میں شامل کر دیا گیا ہے۔

بلبیک نامی فضائیہ کے اڈّے پر روسی فوجی دو بکتر بند گاڑیوں میں داخل ہوتے دیکھے گئے۔ اس موقعے پر روسی فوجی ہوائی فائرنگ بھی کر رہے تھے۔اس کے بعد بھاری ہتھیاروں سے لیس روسی فوجیوں نے اڈّے پر موجود یوکرینی فوجیوں سے ہتھیار ڈالنے کا مطالبہ بھی کیا۔

اس موقعے پر ایک ایمبولنس بھی اڈے میں داخل ہوتی دیکھی گئی۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption روس حامی مسلح گروہ یوکرین کی بحریہ کے جہاز بھی اپنے قبضے میں لیتے رہے ہیں

بلبیک اڈّے کے کمانڈر نے اس سے قبل نے اپنے فوجیوں کو حکم دے رکھا تھا کہ حملہ ہونے کی صورت میں وہ ہوائی فائرنگ کریں۔ کمانڈر نے بی بی سی کو بتایا کہ وہ کئی روز سے کیوف سے تدبیری احکامات کے منتظر تھے تاہم انھیں کوئی حکم جاری نہیں کیے گئے۔

ادھر یوکرین کے فوجی افسران اس بات کی تردید کی ہے اور ان کا کہنا ہے کہ کرائمیا میں ہر فوجی یونٹ کو حملہ ہونے کی صورت میں طریقہِ کار کے بارے میں واضح احکامات دیے گئے ہیں۔

امریکی اور یورپی یونین کی پابندیاں

جمعے کو کرائمیا سے متعلق روسی صدر کے قانون پر دستخط کرنے کے موقع پر ولادیمیر پوتن کے ساتھ پارلیمان کے دونوں ایوانوں کے سپیکر موجود تھے۔

جمعرات کو امریکہ نے روس کے 20 اور یورپی یونین نے 12 روسی افراد پر پابندیاں عائد کرنے کا اعلان کیا تھا جس کے زد میں روسی پارلیمان کے سپیکر بھی ہیں۔

روسی ایوانِ بالا کی جانب سے کرائمیا کو روسی فیڈریشن کا حصہ بنانے کی منظوری کے بعد یورپی یونین کے رہنماؤں نے جمعے کو ہی یوکرین سے قریبی تعلقات کے ایک معاہدے پر دستخط کیے۔

یورپی یونین نے اس معاہدے کا اعلان روس پر مزید پابندیوں کے نفاذ کے چند گھنٹے بعد برسلز میں کیا تھا۔ یورپی یونین کا ایسوسی ایشن معاہدہ یوکرین کی عبوری حکومت کو معاشی اور سیاسی حمایت فراہم کرنے کے لیے تیار کیا گیا۔

اسی بارے میں