ترک فضائیہ نے شامی جنگی جہاز مار گرایا

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ترک وزیراعظم نے اس بات کی تصدیق کی اور فضائیہ کو مبارکباد دی

ترکی کے وزیراعظم رجب طیب اردوگان نے کہا ہے کہ ترک فضائیہ نے ایک شامی جنگی جہاز مار گرایا ہے جس نے ملک کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی ہے۔

یہ واقعہ اطلاعات کے مطابق اس علاقے میں ہوا جہاں شامی باغیوں اور شام کی سرکاری افواج کے درمیان ایک سرحدی کراسنگ پر قبضے کے لیے لڑائی ہو رہی ہے۔

یاد رہے کہ ہزاروں شامی شہری ملک میں تین سال سے جاری بدترین خانہ جنگی سے بچنے کے لیے ترکی اور دوسرے ہمسایہ ممالک میں پناہ لینے کے لیے پہنچے ہیں۔

اس جنگ میں اندازوں کے مطابق ایک لاکھ سے زیادہ شہری اب تک ہلاک ہو چکے ہیں۔

ترک وزیراعظم نے فضائیہ کو اتوار کی اس کاروائی پر مبارکباد دی اور شام کو مخاطب کر کے کہا کہ ’ہمارا ردِ عمل شدید ہو گا اگر ہماری فضائی حدود کی خلاف ورزی کی جائے گی۔‘

شام نے اس واقعے پر کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے مگر اس سے قبل بیان جاری کیا جس میں لتاکیہ کے علاقے میں ترک مداخلت کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

دمشق میں وزارتِ خارجہ کے اس بیان میں کہا گیا ہے کہ ’قصب کے سرحدی علاقے میں گزشتہ دو دنوں سے شام کی خودمختاری کی بلاجواز خلاف ورزی کرنا ثابت کرتا ہے کہ ترکی شام کے اندرونی معاملات میں مداخلت کر رہا ہے۔‘

یاد رہے کہ گزشتہ سال ستمبر میں ترکی نے کہا تھا کہ اس نے ایک شامی ہیلی کاپٹر مار گرایا ہے جس کے بارے میں نائب وزیراعظم بلند آرنج نے کہا تھا کہ اس ہیلی کاپٹر نے فضائی حدود کی خلاف ورزی کی تھی۔

اس سے قبل جون 2012 میں شام نے ایک ترک لڑاکا جہاز بحیرۂ روم میں مار گرایا تھا جس کے بارے میں شام کا دعویٰ تھا کہ اس نے ملک کی فضائی حدود کی حلاف ورزی کی ہے۔

اس واقعے کےبعد ترکی نے اعلان کیا تھا کہ اس نے شام سے متعلق طرز عمل تبدیل کر دیا ہے جس کے نتیجے میں سرحد کی خلاف ورزی کرنے والے کسی بھی شامی جہاز یا ایلیمنٹ کو خطرہ تصور کیا جائے گا۔

اسی بارے میں