فیس بک نے ماں ڈھونڈ دی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption یتھرین کی اس پوسٹ کو 30000 مرتبہ شیئر کیا گیا اور بالآخر یہ اس کی ماں نے بھی دیکھ لی

سنہ 1986 میں امریکہ کے ایک فاسٹ فوڈ ریستوران کے غسل خانے میں نوزائیدہ بچی کو چھوڑ کر غائب ہونے والی خاتون کو اس کی بیٹی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹس کی مدد سے تلاش کر لیا ہے۔

ستائیس سالہ کیتھرین ڈیپرل نے فیس بک پر اپنی ماں کو دو مارچ کو تلاش کرنا شروع کیا تھا۔

سوشل میڈیا کا سماج

ان کی اس پوسٹ کو 30 ہزار مرتبہ شیئر کیاگیا اور بالآخر یہ اس کی ماں نے بھی دیکھ لی۔ جنہوں نے بعد میں اپنے وکیل کی مدد سے کیتھرین سے رابطہ کیا۔

امریکی ریاست پینسلوینیا کے سیلین ٹاؤن میں کیتھرین ڈیپریئل کو ’برگر کنگ بےبی‘ کے نام سے پہچانا جاتا ہے۔

انہوں نے امریکی میڈیا کو بتایا کہ پیر کو پہلی مرتبہ اپنی ماں سے مل کر انہیں’حقیقی خوشی‘ ملی ہے۔

انہوں نے خبر رساں ادارے ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کو بتایا ’وہ میرے تصور سے بھی زیادہ اچھی ہیں۔ وہ بہت شفیق ہیں۔ میں بہت خوش ہوں۔‘

خاتون کا نام ظاہر نہیں کیاگیا۔ ان کی وکیل کا کہنا ہے کہ ان کی موکل کو 16 برس کی عمر میں جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا، جب وہ ملک سے باہر سفر کر رہی تھیں۔

وکیل کے بقول خاتون نے اپنے خاندان سے اپنا حمل چھپایا اور اسی لیے اپنی نومولود بچی کو ہسپتال نہیں لے کر گئیں کیونکہ وہ سوالات سے بچنا چاہتی تھیں۔

اسی بارے میں