ایم ایچ 370 پر سوار مسافروں کے لواحقین جواب چاہتے ہیں

تصویر کے کاپی رائٹ REUTERS
Image caption چینی مسافروں کے بعض لواحقین نے ملائیشیا کی جانب سے دی جانے والی تفصیلات کو تسلیم کرنے سے انکار کر دیا ہے

ملائیشیا کے لاپتہ طیارے میں سوار چینی مسافروں کے لواحقین ملائیشیا کے حکام سے اپنے سوالات کے جوابات طلب کرنے کے لیے دارالحکومت کولالمپور پہنچ گئے ہیں۔

چینی مسافروں کے اہل خانہ کا کہنا ہے کہ انھیں خاطر خواہ معلومات فراہم نہیں کی گئی ہے اور یہ کہ وہ ملائیشیا کے وزیر اعظم اور ٹرانسپورٹ کے وزیر سے ملاقات کرنا چاہتے ہیں۔

واضح رہے کہ ملائیشیا کی قومی فضائی کمپنی ملائیشیا ایئر لائنز کی کوالالمپور سے بیجنگ جانے والی پرواز ایم ایچ 370 جس پر 239 افراد سوار تھے وہ آٹھ مارچ کو لا پتہ ہو گیا تھا اور ابھی تک اس کا کوئی سراغ نہیں ملا ہے۔ اس پر سوار مسافروں میں 153 چینی باشندے تھے۔

دریں اثنا تلاش کا کام ابھی تک جاری ہے اور بحر ہند کے وسیع علاقوں میں اس کی تلاش کی جا رہی ہے۔

چینی مسافروں کے بعض لواحقین نے ملائیشیا کی جانب سے دی جانے والی تفصیلات کو تسلیم کرنے سے انکار کر دیا ہے۔ ان کا خیال ہے کہ حکام نے ان سے کچھ چھپا ضرور رہے ہیں۔

انھوں نے چینی دارالحکومت بیجنگ کے ایک ہوٹل میں ملائیشیا کے اہلکاروں کی جانب سے لاپتہ طیارے کے بارے میں دی جانے والی معلومات پر غصے کا اظہار کیا ہے۔

وانگ چن جیانگ نامی ایک شخص جن کا بھائی اس طیارے میں سوار تھا انھوں نے کہا کہ ’ہماری مانگ ہے کہ ہم وزیر اعظم اور وزیر ٹرانسپورٹ سے ملنا چاہتے ہیں۔ ہمارے پاس ایسے سوالات ہیں جو ہم ذاتی طور پر ان سے پوچھنا چاہتے ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption چینی باشندے ملائیشیا کے سفارت خانے کی جانب جلوس کی شکل میں جا رہے ہیں

سنیچر کو ملائیشیا کے وزیر ٹرانسپورٹ حشام الدین حسین نے کہا کہ بچنے والوں کی تلاش جاری رہے گي۔

انھوں نے کہا کہ میرے لیے سب سے مشکل کام ان کے اہل خانہ سے ملاقات کرنا ہے۔ ہم نے ہمیشہ کہا ہے کہ ہم امید کے برخلاف لوگوں کے زندہ بچنے کی امید کر رہے ہیں۔

ملائیشیا کے حکام نے کہا ہے کہ مصنوعی سیارے سے ملنے والے شواہد کی بنیاد پر یہی کہا جا سکتا ہے کہ لاپتہ طیارہ بحر ہند کے جنوبی حصے میں کہیں گم ہو گیا ہے اور ابھی تک اس کا کوئی سراغ نہیں ہے۔

اس سے قبل تھائی لینڈ کے سیارے نے جنوبی بحرِ ہند میں 300 کے قریب اجسام کی نشاندہی کی ہے جن کے بارے میں شبہ ہے کہ یہ ملائیشیا کے لاپتہ جہاز کے ٹکڑے ہو سکتے ہیں۔

دوسری جانب ملائیشیا ائیر لائن کے لاپتہ بوئنگ 777 کے ملبے کی تلاش کرنے والے ایک چینی اور ایک آسٹریلین بحری جہاز بحرِ ہند میں ایک نئے علاقہ میں تلاش کے کام کے بعد بغیر کسی نتیجے کے ناکام لوٹے آئے ہیں۔

اسی بارے میں