’مشرقِ وسطیٰ مذاکرات کو ختم سمجھنا قبل از وقت ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption جان کیری گذشتہ کئی ہفتوں سے فریقین سے براہِ راست مذاکرات شروع کرنے پر زور دے رہے ہیں

امریکی وزیرِ خارجہ جان کیری نے کہا ہے کہ اسرائیل اور فلسطین کے امن مذاکرات کو مکمل طور پر ختم سمجھنا قبل از وقت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اسرائیل اور فلسطین کے امن مذاکرات کے لیے متعدد ممکنات موجود ہیں۔

جان کیری نے یہ بات بدھ کو مغربی کنارے کا دورہ منسوخ کرتے ہوئے کہی۔

برسلز میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے جان کیری کا کہنا تھا کہ اسرائیل اور فلسطین کے امن مذاکرات کے حوالے سے یہ لمحہ بہت اہم ہے۔

امریکی وزیرِ خِارجہ نے کہا ’یہ لمعہ ایک بہت مشکل اور جذباتی ہے جس کے لیے بڑے فیصلوں کی ضرورت ہوتی ہے اور جس میں چند مشکل سیاسی فیصلے ہوتے ہیں۔‘

خیال رہے کہ جان کیری گذشتہ کئی ہفتوں سے فریقین سے براہِ راست مذاکرات شروع کرنے پر زور دے رہے ہیں تاہم ان کی کوششوں کو اس وقت دھچکا لگا جب اسرائیلی جیلوں میں قید 26 قیدیوں کی رہائی کے حوالے سے اختلافات سامنے آئے۔

فلسطین کے صدر محمود عباس کا کہنا ہے کہ ان قیدیوں کو ہر صورت رہا کیا جائے کیونکہ اسرائیل نے جولائی میں شروع ہونے والے مذاکرات سے قبل ان کی رہائی کا وعدہ کیا تھا۔

تاہم اسرائیلی حکام کا کہنا ہے کہ جب تک فلسطین مذاکرات شروع کرنے پر آمادگی کا اظہار نہیں کرتا وہ ان قیدیوں کو رہا کرنے پر ہچکچاہٹ کا شکار ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption محمود عباس نے چوتھے جنیوا کنونشن کے ساتھ شروع بین الاقوامی معاہدوں کی توثیق کرنے کے لیے ’فلسطین کی ریاست‘ کی جانب سے درخواستوں پر دستخط کیے۔

جان کیری کے اس دورے سے چند گھنٹے قبل مغربی کنارے میں ہونے والے ایک اجلاس میں فلسطین کے صدر محمود عباس نے چوتھے جنیوا کنونشن کے ساتھ شروع بین الاقوامی معاہدوں کی توثیق کرنے کے لیے ’فلسطین کی ریاست‘ کی جانب سے درخواستوں پر دستخط کیے۔

ان کی فتح تحریک اور فلسطین لبریشن آرگنائزیشن (پی ایل او) کے اہم ارکان نے اس اقدام کی حمایت میں متفقہ طور پر ووٹ دیا۔

دوسری جانب اسرائیل کے ایک پریشر گروپ ’پیس ناؤ‘ کا کہنا ہے کہ حکومت نے مشرقی یروشلم میں یہودی آباد یوں میں708 گھروں کی تعمیر کے لیے نئے ٹینڈرز جاری کیے ہیں۔

اسرائیل کے سنہ 1967 میں غربِ اردن اور مشرقی یروشلم پر قبضے کے بعد سے بنائی گئی ایک سو سے زیادہ آبادیوں میں پانچ لاکھ کے لگ بھگ یہودی رہتے ہیں۔

فلسطینی ان علاقوں اور غزہ کی پٹی کے علاقوں پر مشتمل فلسطینی ریاست قائم کرنا چاہتے ہیں۔

مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں آبادیاں تعمیر کرنا بین الاقوامی قانون کے مطابق غیر قانونی ہے مگر اسرائیل اس سے اختلاف کرتا ہے۔

اسی بارے میں