امریکہ نے ہوائی اڈوں پر الیکٹرونک آلات کی چیکنگ سخت کر دی

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption امریکہ نے گذشتہ ہفتے ممکنہ دہشت گردی کے خطرے کے حوالے سے نئے سکیورٹی اقدامات کا اعلان کیا تھا تاہم ان کی تفصیلات نہیں بتائی تھیں

امریکی حکام نے بیرونِ ملک ایسے ہوائی اڈوں کو الیکٹرونک آلات کی چیکنگ مزید سخت کرنے کا حکم دیا ہے جہاں سے براہِ راست امریکہ پروازیں جاتی ہیں۔

امریکی ٹرانسپورٹ حکام نے ایک بیان میں کہا ہے کہ مسافروں سے کہا جا سکتا ہے کہ وہ اپنے الیکٹرونک آلات کو آن کریں۔

حکام کے مطابق آن نہ ہونے والے الیکٹرونک آلات کو جہاز تک جانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

ایک امریکی اہلکار نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ جن ہوائی اڈوں کو الیکٹرونک آلات کی چیکنگ مزید سخت کرنے کا حکم دیا گیا ہے ان میں لندن کا ہیھترو ہوائی اڈہ بھی شامل ہے۔

خیال رہے کہ امریکہ نے گذشتہ ہفتے ممکنہ دہشت گردی کے خطرے کے پیشِ نظر نئے سکیورٹی اقدامات کا اعلان کیا تھا تاہم ان کی تفصیلات نہیں بتائی تھیں۔

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ یہ تبدیلیاں انٹیلی جنس کی ان اطلاعات کے بعد کی گئی ہیں جس میں کہا گیا تھا کہ شام اور یمن کے اسلامی شدت پسند ہوائی اڈے کی سکیورٹی کو دھوکہ دینے والے بم تیار کر سکتے ہیں۔

حکام کے مطابق وہا ں ’قابل اعتبار‘ خطرہ تھا، تاہم انھوں نے ان اقدامات کو کسی مخصوص سیکورٹی تبدیلیوں سے منسلک نہیں کیا۔

واضح رہے کہ امریکہ کے پاس بیرونِ ملک ہوائی اڈوں کی سکیورٹی کا براہِ راست کنٹرول نہیں ہے تاہم ایئرلائنز اور ہوائی اڈوں کو پرازوں کی بلاِ تعطل روانگی قائم رکھنے کے لیے ٹرانسپورٹیشن سکیورٹی ایڈمنسٹریشن (ٹی ایس اے) کے قائم کردہ معیارات کی پابندی کرنی ہو گی۔

ٹی ایس اے کی جانب سے جاری کیے گئے ایک بیان میں الیکٹرونک آلات کی چیکنگ کی تفصیلات پہلی بار جاری کی گئی ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ حکام سکیورٹی چیکنگ کے دوران الیکٹرونک آلات، جن میں موبائل فونز بھی شامل ہیں، کے مالکان کو انھیں آن کرنے کا کہہ سکتے ہیں۔

بیان کے مطابق آن نہ ہونے والے الیکٹرونک آلات کو جہاز تک جانے کی اجازت نہیں دے جائے گی اور ایسے شخص کی مزید چیکنگ بھی کی جا سکتی ہے۔

دوسری جانب برطانیہ، فرانس اور جرمنی کا کہنا ہے کہ وہ امریکی مطالبات پر عمل کریں گے۔

اسی بارے میں