گوشت نہ پکانے پر بیوی کا قتل، 18 سال قید کی سزا

تصویر کے کاپی رائٹ Mehr
Image caption بیوی سے کہا کہ گوشت پکاؤ لیکن اس نے کہا کہ وہ گوشت نہیں کچھ اور پکائے گی: نور حسین

امریکی شہر نیویارک کی ایک عدالت نے پسند کا کھانے نہ بنانے پر بیوی کو قتل کرنے کے الزام میں ایک پاکستانی نژاد امریکی شہری کو 18 سال قید کی سزا سنائی ہے۔

نور حسین نے تین اپریل 2011 میں اپنی اہلیہ نذر حسین کو رات کے کھانے میں گوشت نہ پکانے پر تشدد کر کے ہلاک کر دیا تھا۔

جمعرات کو بروکلن کی سپریم کورٹ کے جج میتھو ڈیمک نے نور حسین کو یہ سزا سنائی۔

75 سالہ نور حسین کی صحت خراب ہے اور خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ سزا کی مدت کے دوران ہی ان کی موت واقع ہو سکتی ہے۔

ضلعی اٹارنی جنرل کنیتھ ٹامپسن نے نور حسین کی سخت سزا کے فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملزم نے سفاکانہ طور پر اس وقت اپنی بیوی پر تشدد کیا جب وہ بستر پر لیٹی ہوئی تھیں اور اپنا دفاع نہیں کر سکتی تھیں

’نور حسین نے ظالمانہ طریقے سے اپنی 66 سالہ تیسری بیوی پر اس وقت تک تشدد کیا جب تک ان کی موت واقع نہیں ہو گئی۔ اب مدعا علیہ سے اس کے ظالمانہ اور بزدلانہ اقدام پر انصاف کیا گیا ہے۔‘

طبی جانچ پڑتال کرنے والے افسر کے مطابق نور حسین نے اپنی اہلیہ کو 20 مرتبہ شدید تشدد کا نشانہ بنایا اور دماغ پر شدید چوٹیں آنے کی وجہ سے ان کی موت واقع ہو گئی۔

سماعت کے موقع پر عدالت میں نذر حسین کی تصاویر بھی پیش کی گئی تھیں جس میں ان کے چہرے پر تشدد کے نشانات تھے اور وہ خون سے بھرے ایک پلنگ پر بے سدھ پڑی ہوئی تھیں۔

ایک گواہ صفیدہ خان نے عدالت کو بتایا کہ نور حسین اور نذر حسین کی آپس میں کئی سالوں سے نوک جھونک جاری تھی اور کئی بار انھوں نے اس میں مداخلت بھی کی۔

عدالت میں دیے جانے والے بیان کے مطابق جس دن نذر حسین کی موت واقع ہوئی اس دن وہ رو پیٹ رہی تھیں اور ان کا شوہر چیخ رہا تھا اور انھیں کوس رہا تھا۔ نور حسین کے رشتہ داروں کے مطابق وہ 30 سال پہلے امریکہ منتقل ہوئے تھے۔ اس مقدمے میں انھیں زیادہ سے زیادہ 25 سال قید کی سزا ہو سکتی تھی۔

اس سے پہلے نور حسین کے وکیل نے عدالت میں موقف اختیار کیا تھا کہ ان کے موکل کا ارادہ اپنی اہلیہ کو ہلاک کرنے کا نہیں تھا بلکہ وہ انھیں سبق سکھانا چاہتے تھے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ نور حسین نے پہلے کہا تھا کہ ان کی بیوی کو آدھی رات کو خون کی الٹیاں آئیں اور ان کو سانس لینے میں مشکل پیش آ رہی تھی۔ تاہم بعد میں انھوں نے اعتراف کر لیا کہ انھوں نے اپنی اہلیہ پر تشدد کیا تھا۔

مترجم کے ذریعے بات کرتے ہوئے نور حسین نے پولیس کے سامنے ویڈیو انٹرویو میں اعتراف کیا کہ انھوں نے اپنی اہلیہ کو بازو اور ہونٹوں پر مارا تھا۔

انھوں نے کہا: ’میں نے اس سے کہا تھا کہ گوشت پکاؤ۔ اس نے کہا کہ وہ گوشت نہیں کچھ اور پکائے گی۔‘

نور حسین نے کہا کہ انھوں نے ڈنڈے سے اپنی اہلیہ پر تشدد کیا اور ڈنڈا باہر پھینک دیا تاکہ وہ دوبارہ تشدد نہ کریں۔

اسی بارے میں