ملازمین کو کام کے دوران سونے کی اجازت

تصویر کے کاپی رائٹ ThinkStock
Image caption کافی لوگ دوپہر کے کھانے کے بعد اپنی توجہ کھو بیٹھتے ہیں۔ کیا ایک گھنٹا سونے سے یہ کیفیت تبدیل ہو سکتی ہے؟

جنوبی کوریا کے اخبار کوریا ٹائمز کے مطابق یکم اگست سے سیول مٹروپالیٹن گورنمنٹ (ایس ایم جی) کے ملازمین دوپہر کے ایک بجے سے لے کر شام کے چھ بجے کے دوران ایک گھنٹے کے لیے سو سکتے ہیں۔

اس سہولت سے فائدہ اٹھانے کے لیے انھیں پھر یا تو کام پر جلدی آنا ہوگا یا دیر تک رہنا ہوگا۔

اخبار کے مطابق ملک میں کسی ایسے منصوبے کو پہلی بار متعارف کروایا گیا ہے۔

سٹی ہال کے ترجمان کے مطابق ’ملازمین کو اس مقصد کے لیے لاؤنج، کانفرنس روم یا دیگر جگہ دستیاب ہیں۔ مقامی حکومت اگلے سال مزید رقم خرچ کر کے آرام کرنے کے مزید مقامات تیار کرے گی۔‘

اب تک یہ واضح نہیں ہے کہ کتنے لوگ اس نئے منصوبے کا فائدہ اٹھائیں گے کیونکہ انھیں اس گھنٹے کی کمی پوری کرنا ہوگی اور اکثر لوگ پہلے ہی سے دوپہر کے کھانے کے وقت سو لیتے ہیں۔

اخبار کوریا آبزرور کے مطابق ایس ایم جی کے ملازمین کے لیے ایک عام دن صبح نو بجے سے شام کے چھ بجے تک کا ہوتا ہے، چنانچہ اگر کوئی ملازم سونے کا وقفہ لینا چاہتا ہے تو انھیں پہلے اپنے منتنظم کو اطلاع کرنی ہو گی اور پھر یا تو صبح آٹھ بجے کام شروع کرنا ہوگا یا شام سات بجے تک کام کرنا ہوگا۔

اسی بارے میں