فلسطینی مظاہرین نے فٹبال میچ روک دیا

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption ان مظاہرین نے فلسطینی جھنڈے اٹھائے رکھے تھے

فلسطین کی حمایت میں احتجاج کرنے والے مظاہرین نے آسٹریا کے شہر بشوس وفن میں جاری فٹبال میچ روک دیا۔

تفصیلات کے مطابق فٹبال سیزن شروع ہونے سے قبل اسرائیلی فٹبال کلب مکابی ہائیفا اور فرانسیسی کلب لیل کے درمیان کھیلے جانے والے میچ میں فلسطین کی حمایت میں احتجاج کرنے والے مظاہرین میچ کے اختتامی لمحات سے قبل میدان میں گھس آئے۔

ان مظاہرین نے فلسطینی جھنڈے اٹھائے رکھے تھے۔ اس واقعے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

یاد رہے کہ بدھ کے روز فرانسیسی عدالت نے تین افراد کو یہود مخالف شدت پسندی پھیلانے کے جرم میں قید کی سزا سنائی تھی۔

یہ تینوں لوگ فرانس کے دارلحکومت پیرس میں فلسطین کی حمایت میں احتجاج کر رہے تھے، تاہم صُورت حال بگڑ گئی اور احتجاج میں شامل دیگر مظاہرین نے یہودی دکانوں اور ان کی عبادت گاہوں کو نقصان پہنچایا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption غزہ میں بڑھتے ہوئے تشدد پر اسرائیل کے خلاف پوری دنیا میں مظاہرے جاری ہیں

فرانسیسی دارالحکومت میں ریلیوں پر پابندی کے باوجود لوگوں نے اسرائیل کے خلاف مظاہرہ کیا جس میں بلوہ پولیس کو مداخلت کرنی پڑی۔

یورپ میں مسلمانوں اور یہودیوں کی سب سے زیادہ تعداد فرانس میں قیام پذیر ہے۔

غزہ میں بڑھتے ہوئے تشدد پر اسرائیل کے خلاف پوری دنیا میں مظاہرے جاری ہیں۔ پچھلے ہفتے برطانوی دارالحکومت لندن میں بھی اس سلسلے میں ایک بڑی ریلی نکالی گئی جبکہ بیلجیئم کے دارلحکومت برسلز میں مظاہرین نے ایک ریلی میں اسرائیلی جھنڈا پھاڑ دیا۔

یاد رہے کہ اسرائیل نے آٹھ جولائی کو غزہ میں فوجی آپریشن شروع کیا تھا، اسرائیلی حکام کا کہنا ہے کہ اس آپریشن کی وجہ غزا کی طرف راکٹ حملے روکنا ہے۔

15 روز بعد اب تک اس آپریشن میں 649 فلسطینی اور 32 اسرائیلی فوجی ہلاک ہو چکے ہیں۔جبکہ فلسطین کے طبی ذرائع کے مطابق جمعرات کو ہلاکتوں کی تعداد 710 تک پہنچ گئی ہے۔

اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ اب غزہ کا 43 فیصد علاقہ ایسا ہے جہاں عام شہریوں کو جانے سے روک دیا گیا ہے یا جہاں اسرائیل کی اس وارننگ کا اطلاق ہوتا ہے کہ ’یہاں سے نکل جائیں۔‘

اسی بارے میں