طرابلس: امریکی سفارتخانہ سکیورٹی خدشات کی وجہ سے بند

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption طرابلس میں امریکی سفارتخانہ پہلے ہی انتہائی کم عملے کے ساتھ کام کر رہا تھا

امریکی وزارتِ خارجہ کا کہنا ہے کہ لیبیا کے دارالحکومت طرابلس میں امریکی سفارتخانے کو سکیورٹی خدشات کی وجہ سے بند کر دیا گیا ہے۔

وزارتِ خارجہ کا کہنا ہے کہ لیبیا میں مسلح گروہوں کی جھڑپوں کے باعث سفارتخانے کے عملے کو ہمسایہ ملک تیونس لے جایا جا رہا ہے۔

وزارتِ خارجہ نے امریکی شہریوں کو لیبیا جانے کے خلاف تنبیہ بھی کی ہے۔

ادھر طرابلس کے ہوائی اڈے پر مقامی مسلح گروہوں کے درمیان شدید جھڑپیں جاری ہیں۔

لیبیا میں 2011 میں حکومت مخالف تحریک کے بعد سے عدم استحکام ہے اور ملک کے متعدد حصےمسلح گروہوں کے کنٹرول میں ہیں۔

وزارتِ خارجہ کی ترجمان ماری حرف کا کہنا ہے کہ سفارتی عملے کو لیبیا سے نکالنے کا فیصلہ بیرونِ ملک امریکی سفارتکاروں کو لاحق خطرات کے بارے میں اوباما انتظامیہ کے فکر کی نشاندہی کرتا ہے۔

ستمبر 2012 میں لیبیا کے شہر بن غازی میں امریکی قونصل خانے پر حملے میں امریکی سفیر کرسٹوفر سٹیونز اور دیگر تین امریکی ہلاک ہوگئے تھے۔

طرابلس میں امریکی سفارتخانہ پہلے ہی انتہائی کم عملے کے ساتھ کام کر رہا تھا۔ ترجمان نے بتایا کہ سفارتخانہ بند کرنے کے بعد بقایا عملے کو سنیچر کی صبح تیونس لے جایا گیا۔

اسی بارے میں