حامد کرزئی کے رشتے کے بھائی خود کش حملے میں ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption حشمت کرزئی کے قتل کی فوری وجہ معلوم نہیں ہو سکی

افغانستان کے جنوبی شہر قندھار میں حکام کے مطابق صدر حامد کرزئی کے رشتے کے بھائی ایک خود کش بم دھماکے میں ہلاک ہو گئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق حشمت کرزئی اپنے گھر میں ایک خیر خواہ کا استقبال کر رہے تھے جب خود کش حملہ آور نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔

ایک دوسری اطلاع کے مطابق خود کش حملہ آور نے اپنی پگڑی میں آتش گیر مادہ چھپا رکھا تھا۔

خودکش حملہ آور نے گلے ملنے کے بعد خود کو دھماکے سے اڑا لیا جس کے نتیجے میں حشمت کرزئی موقع پر ہلاک ہوگئے۔

دھماکہ اس وقت ہوا جب حشمت کرزئی عید کے موقع پر اپنے گھر پر مہمانوں کا استقبال کر رہے تھے۔

خیال رہے کہ حشمت کرزئی افغانستان کے ممکنہ صدر اشرف غنی کی صدارتی مہم کے سربراہ تھے۔ان کے قتل کی فوری وجہ معلوم نہیں ہو سکی۔

کابل میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار ڈیوڈ لیون کا کہنا ہے کہ حشمت کرزئی اشرف غنی کے بڑے حامی تھے اور وہ قندھار کی اہم سیاسی شخصیت تھے۔

خیال رہے کہ 25 سال قبل حشمت کرزئی کے والد کو بھی ان کے خاندان والوں نے قتل کر دیا تھا۔

سنہ 2011 میں حامد کرزئی کے بھائی کو قندھار میں واقع ان کے گھر میں ایک حملے میں قتل کر دیا گیا تھا۔

اسی بارے میں