ہالی وڈ فلمیں امریکی تنوع کی عکاس نہیں

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ہسپانوی اداکارہ پنیلیپی کروز - ایک رپورٹ کے مطابق ہسپانی لوگ ہالی ووڈ میں ’کم نمائندہ‘ یا "sexualised" ہیں۔

ایک نئی تحقیق کے مطابق ہالی وڈ کی فلمیں غیر سفید نسلی گروپوں کی کم نمائندگی کرتی ہے۔ ملک کی 16 فیصد آبادی ہونے کے باوجود ہسپانوی اداکارکاروں کو 2013 میں محض 4.9 فیصد بولنےوالے کردار ملے۔

سیاہ فام اداکاروں کو 14.1 فیصد رول ملے اور 17 فیصد فلموں میں سیاہ فام افراد کو رول نہیں ملا۔ یونیورسٹی آف کیلیفورنیا کی طرف سے جاری کی گئی اس تحقیق نے 2013 کی 100 مقبول اور کامیاب بزنس کرنے والی فلموں کو دیکھا۔

اگرچہ 2014 میں سٹیو مکوین پہلے سیاہ فام ڈائریکٹر تھے جنہیں آسکر ایوارڈ ملا۔ تحقیق کے مطابق 2007 کی مقابلے میں محض 1.1 فیصد زیادہ سیاہ فام کردار فلموں میں آئے۔ مزید یہ کہ اگر ایک فلم کے ڈائریکٹر سیاہ فام ہو تو زیادہ امکان ہے کہ فلم میں سیاہ فام اداکار بھی ہوں گے۔

امریکہ کی تمام فلمی ٹکٹوں کا ایک چوتھائی ہسپانی خریدتے ہیں۔ اگرچہ رپورٹ کے مطابق کےہالی وڈ فلموں میں ہسپانوی نسل کے لوگوں کی ’واضح طور پر‘ سب سے کم نمائندگی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption 2014 میں سٹیو مکوین پہلے سیاہ فام ڈائریکٹر تھے جنھیں آسکر ملا ہو۔

رپورٹ کے مطابق ہسپانوی عورت کو دوسرے نسلی گروہ کے مطابق زیادہ جنس سے منسوب کیا جاتا ہے اور تقریباً 37 فیصد ہسپانوی لڑکیاں پوری یا جزوی طور ننگی دکھائی دیں۔

رپورٹ کے مطابق یہ اس بات کی نشاندہی کرتی ہے کہ ’سکرین پر آنے والے کردار اب بھی موجودہ ثقافتی سٹیریوٹایپ سے اثر انداز ہوتے ہیں۔‘