دو سال بند رہنا کتنا نقصان دہ ہے؟

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اسانژ کو کئی طبی مسائل کا سامنا ہے جن میں ہائی بلڈ پریشر اور شدید کھانسی شامل ہے

وکی لیکس کے بانی جولین اسانژ نے کہا ہے کہ وہ لندن میں ایکواڈور ایمبیسی سے جلد نکل جائئں گے۔ ایسے میں ان کی صحت کے بارے میں چہ مگوئیاں جاری ہیں کہ دو برس تک چار دیواری میں محصور رہنے سے صحت پر کس قسم کے اثرات پڑ سکتے ہیں۔

وہ جونھی سفارتخانے کی عمارت سے نکلیں گے تو انھیں گرفتار کر لیا جائے گا۔

اسانژ نے ایک نیوز کانفرنس میں بتایا ہے کہ انھی باہر کے علاقے میں رسائی حاصل نہیں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ صحت مند لوگ اگر چار دیواری میں بند رہیں تو ان کے لیے بھی مشکل ہو جاتی ہے ۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق انھیں کئی طبی مسائل کے باعث علاج کی ضرورت ہے جن میں ہائی بلڈ پریشر اور شدید کھانسی شامل ہے۔

بی بی سی ون شو کی ڈاکٹر سارا جاویز کا کہنا ہے کہ چار دیواری کے اندر رہنے سے پیدا ہونے والے طبی مسائل میں سب سے اہم وٹامن ڈی کی کمی ہے۔

لوگوں میں 80 فیصد وٹامن ڈی سورج کی روشنی سے آتی ہے اور اس کی کمی سے درجنوں طبی مسائل پیدا ہوتے ہیں، جن میں ڈپریشن، درد، اور دل کی بیماریاں شامل ہیں۔

کیمبریج یونیورسٹی میں جنرل پریکٹس کے پروفیسر سمن گرفن کا کہنا ہے کہ محض وٹامن کی گولیاں زود اثر ثابت نہیں ہوتیں۔اس کے لیے سورج کی کرنوں میں لیٹنا اور یو وی لیمپ کارآمد ہوتا ہے لیکن دو برس کا عرصے میں یہ کارآمد نہیں رہتے۔ ان سے جلد کا کینسر ہونے کا خدشہ ہوتا ہے۔

گریفن کے مطابق اگر کوئی یہ یقینی نہ بنائے کہ اسے روزانہ سورج کی روشنی ، صحت مند خوراک اور ورزش ملے تو دو برس کے عرصے میں جسم کو بہت زیادہ نقصان پہنچ جاتا ہے۔

گریفن کا خیال ہے کہ ائیر کنڈیشن کی ہوا اسانژ کے لیے نقصان دہ ہوگی۔ اس کے ان کے مزاج میں جمود پیدا ہوا ہوگا۔ ان کے بقول دھوپ لوگوں کے مزاج کو خوشگوار کرتی ہے۔

ایک چیز جو اسانژ کے بارے میں جاننا مشکل ہے وہ ہے ان کی ذہنی حالت۔ کلینیکل سائیکولوجسٹ لنڈا بلیر کے بقول ایسے میں یہ اہم ہے کہ آپ اپنے صورتحال کو کس طرح لیتے ہیں: ’یہ سب رویے کی بات ہے جب ہماری آزادی سلب ہوتی ہے تو ہمیں غصہ آتا ہے۔‘

بلئیر کا کہنا ہے کہ ’بعض جنگی قیدی کھیلوں میں حصہ لے کر اور اس حقیقت کو تسلیم کر کے جیتتے ہیں کہ وہ بدترین صورتحال میں بھی زندہ ہیں۔

’آپ کو خود کو گھرا ہوا محسوس نہیں کرنا چاہیے۔ یہ بہت ضروری ہے کہ آپ محسوس کریں کہ صورتحال پر کنٹرول ہے۔‘