محمد اوسلو میں مردوں کا سب سے مقبول نام

Image caption محمد نام انگلینڈ، ویلز کے بعد اب اوسلو میں سب سے مقبول نام ہے

ناروے کے دارالحکومت اوسلو میں مردوں کے ناموں میں سب سے عام نام محمد ہے۔

ناروے کے محکمۂ اعداد و شمار کے یرگن اورن نے مقامی نیوز ویب سائٹ کو بتایا کہ ’یہ بہت دلچسپ ہے کیونکہ حالیہ دنوں میں شہر کی آبادی کی گنتی سے پتا چلا کہ 4800 سے زیادہ لڑکوں اور مردوں کے نام محمد ہیں۔‘

یرگن نے بتایا کہ اس نام ’نے مشہور ناموں ’یان‘ اور ’پر‘ کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ اگرچہ محمد کئی طرح کے تلفظ سے لکھا جاتا ہے گذشتہ چار سال سے بچوں کے مقبول ترین ناموں میں سے ایک رہا ہے تاہم یہ پہلی بار ہے کہ یہ نام مردوں کے ناموں میں سے ایک ہے۔‘

یہ صرف ناروے ہی نہیں بلکہ برطانیہ کے اعداد و شمار کے محکمے کا کہنا ہے کہ محمد 2013 میں انگلینڈ اور ویلز میں ان سب سے عام نام تھا جو والدین اپنے لڑکوں کو دیتے ہیں۔

اسلام پر ایک ویب سائٹ کے مطابق نارویجن مسلمان 2012 میں ناروے کی کل آبادی جو 55 لاکھ ہے اس میں سے تقریباً 150000 مسلمان ہیں۔

ان میں سے اکثریت پاکستانی، صومالیہ، عراق اور مراکش سے تعلق رکھتے ہیں مگر ناروے میں ہی یورپ کی سب سے بڑی اینٹی اسلام تنظیم ’سٹاپ اسلامائزیشن آف ناروے‘ ہے۔

اس تنظیم کو 2008 میں قائم کیا گیا تھا اور اس کے 3000 سے زیادہ اراکین ہیں۔

ناروے کے دارالحکومت اوسلو کے باہر فیلپ نومولود لڑکوں کا سب سے مقبول نام ہے جبکہ ایما لڑکیوں کا پسندیدہ ترین نام ہیں۔