دس چیزیں جن سے ہم لاعلم تھے

تصویر کے کاپی رائٹ REUTERS

1۔ موسمِ گرما میں پیدا ہونے والے بچے موسمِ سرما میں پیدا ہونے والوں کے مقابلے میں زیادہ جلدی گھٹنیوں چلتے ہیں۔

مزید جاننے کے لیے (نیوز وائز)

2۔گوگل کے تین ملازمین کیلیفورنیا میں کمپنی کے دفتر کے احاطے میں مہینوں قیام پذیر رہے اور عملے کے لیے مختص کینٹین سے کھانا کھاتے اور ورزش گاہ کے غسل خانے استعمال کرتے رہے۔

مزید جاننے کے لیے کلک کریں

3۔ نیند میں بھی آپ کا دماغ جاگ رہا ہوتا ہے۔

مزید جاننے کے لیے کلک کریں

4۔ اگر ہر کسی کو اس کا صحیح ساتھی کی تلاش ہو تو دنیا میں سچا پیار دس ہزار زندگیوں میں سے صرف ایک میں مل سکے گا۔

مزید جاننے کے لیے (دی گارڈین)

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption پیلے کو فٹبال کی دنیا میں لیجنڈ تصور کیا جاتا ہے

5۔ فٹبالر پیلے کا مذہبی نام مشہور امریکی موجد ٹامس ایڈیسن کے نام پر رکھا گیا تھا۔

مزید جاننے کے لیے کلک کریں

6۔ اپنی زندگی کے آخری 13 برس میں پاپ آرٹ کے ’بیڈ بوائے‘ کہلائے جانے والے اینڈی وارہول نے اپنے مداحوں کے خطوط، کنکریٹ کے ٹکڑے، ہزاروں ڈاک ٹکٹ حتیٰ کہ استعمال شدہ کونڈم سمیت تین لاکھ عام استعمال کی اشیا 610 گتے کے ڈبوں میں جمع کیں۔

مزید جاننے کے لیے کلک کریں

7۔ سب سے بڑا شکاری ڈائنوسار ممکنہ طور پر پوری شارک مچھلی کھا جاتا تھا۔

مزید جاننے کے لیے (دی سائنٹسٹ)

8۔ بابل کی تہذیب کے ایک نسخے میں دی گئی ہدایات کے مطابق حضرت نوح کی کشتی جس رسّی سے بُنی گئی اس کی لمبائی لندن سے اینڈنبرا کے فاصلے کے برابر تھی۔

مزید جاننے کے لیے (دی ٹائمز)

تصویر کے کاپی رائٹ thinstock
Image caption پہلی بار ڈی این اے فنگر پرنٹ کا استعمال ایک نوجوان تارکِ وطن کو واپس گھانا بھیجنے سے بچانے کے لیے کیا گیا

9۔ دنیا میں پہلی بار ڈی این اے فنگر پرنٹ کا استعمال ایک نوجوان تارکِ وطن کو واپس گھانا بھیجنے سے بچانے کے لیے کیا گیا تھا۔

مزید جاننے کے لیے (سائنس میوزیم بلاگ)

10۔ آنجہانی سر ڈونلڈ سنڈن وہ آخری فرد تھے جو مشہور مصنف آسکر وائلڈ کے محبوب لارڈ الفریڈ ڈگلس کو جانتے تھے اور وہ ان کے جنازے میں شرکت کرنے والے دو افراد میں سے ایک بھی تھے۔

مزید جاننے کے لیے کلک کریں

اسی بارے میں