افیون زدہ نوڈلز کھائیے، دوبارہ آئیے

تصویر کے کاپی رائٹ thinkstock
Image caption پولیس کے مطابق اس پاؤڈر میں افیون کی اتنی مقدار ہوتی ہے کہ کچھ عرصے میں نوڈلز کھانے والوں کے ٹیسٹ مثبت آ جاتے ہیں

چین میں نوڈلز بیچنے والے ایک ریسٹورنٹ کے مالک نے گاہکوں کو دوبارہ ریسٹورنٹ میں لانے کے لیے نوڈلز میں افیون کے بیجوں کا پاؤڈر ملانے کا اقرار کیا ہے۔

یہ بھی ایک دلچسپ کہانی ہے کہ چین کے شانزی صوبے کے ینان نامی ریسٹورنٹ میں بنائے جانے والے نوڈلز میں افیون کے بیج ملانے کا انکشاف کیسے ہوا۔

ہوا یہ کہ لیو جویو مزے لے لے کر نوڈلز کھانے کے بعد ٹریفک پولیس کے ہتھے چڑھ گیا جنہوں نے اس کا ڈرگ ٹیسٹ کر ڈالا جو کہ ظاہری بات ہے، مثبت ہی آنا تھا۔

یہ لیو جویو کے لیے تو یقیناً حیرت انگیز انکشاف تھا کیونکہ اس کے بقول اس نے تو زندگی بھر منشیات کا استعمال ہی نہیں کیا۔

پولیس حیران تو بے چارہ لیو جویو پریشان۔

شام کے اخبار زیان کے مطابق لیو کے ذہن میں اچانک خیال آیا کہ اس نے تو نوڈلز کھائے تھے تو کیوں نہ اپنے رشتہ داروں کو بھی نوڈلز کھلائے، شاید سارا چکر نوڈلز میں ہی ہو؟

پھر کیا تھا، لیو کے رشتہ دار نوڈلز کھانے کے بعد سیدھا اپنا ڈرگ ٹیسٹ کروانے پہنچے اور سب کے سب کا ٹیسٹ مثبت نکل آیا اور یوں افیون ملے نوڈلز کا بھانڈا پھوٹ گیا۔

روزنامہ ہو شانگ کے مطابق ریسٹورنٹ کے مالک ژانگ نے پولیس کے سامنے اقرار کیا کہ اس نے گذشتہ ماہ دو کلو افیون کے بیج خریدے اور ان کا پاؤڈر بنا کے نوڈلز میں ملا لیا۔

پولیس کے مطابق اس پاؤڈر میں افیون کی اتنی مقدار ہوتی ہے کہ کچھ عرصے میں نوڈلز کھانے والوں کے ٹیسٹ مثبت آ جاتے ہیں۔

اخبار مارننگ پوسٹ کے مطابق افیون کے بیج ہاٹ سپاٹ سوس بنانے میں استعمال ہوتے تھے لیکن بعد ازاں اس کے استعمال پر پابندی لگا دی گئی تھی۔

اسی بارے میں