جاپان: ماؤنٹ اونتاکے آتش فشاں پھٹنے سے 30 زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption آتش فشاں کے پھٹنے کے بعد ایک بڑے علاقے سے لوگوں کو گرنے والے ملبے سے خبردار کیا گیا ہے

جاپان میں ماؤنٹ اونتاکے کا آتش فشاں پھٹنے کے نتیجے میں راکھ اور پتھروں کی بارش شروع ہوئی جس سے 30 افراد شدید زخمی ہو گئے ہیں۔

پولیس کے مطابق ان زخمی افراد میں سے 10 ابھی تک ہوش میں نہیں ہیں جبکہ بعض ابھی تک بے ہوش ہیں۔

ماؤنٹ اونتاکے کی چوٹی 3067 میٹر بلند ہے اور آتش فشاں کے پھٹنے کے وقت کئی کوہ پیما پہاڑ پر موجود تھے جن میں سے 230 کے قریب اتر کر قریبی لاجز میں پناہ لینے پر مجبور ہوئے۔

ابھی تک 40 کے قریب کوہ پیماؤں کو بچایا نہیں جا سکا ہے۔

وزیراعظم شنزو آبے نے فوجی جوانوں کو ان پھنسے ہوئے افراد کی مدد کرنے کا حکم دیا ہے۔

حکام نے آتش فشاں کے قریب کے 4 کلومیٹر کے علاقے کے میں رہائش پذیر افراد کو خبردار کیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ایک خاتون جو پہاڑ کے قریب ایک ہوٹل چلاتی ہیں نے بتایا کہ زمین پر 6 انچ موٹی راکھ کی تہہ ہے

اس سے قبل ماؤنٹ اونٹاکی 2007 میں پھٹا تھا۔

ایک خاتون جو اس پہاڑ کے قریب ایک ہوٹل چلاتی ہیں نے جاپانی براڈکاسٹر این ایچ کے کو بتایا کہ ’اس کی آواز گرج دار تھی اور پھر میں نے دھماکوں کی آوازیں سنیں اور سب کچھ تاریک ہو گیا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption آتش فشاں پھٹنے کے وقت کئی کوہ پیما اس پہاڑ پر موجود تھے جن میں سے کئی بروقت اترنے میں کامیاب ہو گئے

انہوں نے مزید بتایا کہ ’زمین پر 6 انچ موٹی راکھ کی تہہ جمی ہوئی ہے۔‘

ایک کوہ پیما نے بتایا کہ ’میں بمشکل اپنی زندگی بچا کر بھاگی۔‘

اسی بارے میں