کوریا کی سرحد پر فائرنگ کا تبادلہ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption جنوبی کوریا کے کارکن غبارے اٹھا کر مظاہرہ کر رہے ہیں

جنوبی کوریا کے حکام نے کہا ہے کہ جنوبی اور شمالی کوریا کی فوجوں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا ہے۔

دونوں ملکوں کی سرحد پر کشیدگی اس وقت پیدا ہوئی جب جنوبی کوریا کے کچھ کارکنوں نے شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ اِن کی مخالفت میں لکھے ہوئے غبارے اٹھا کر مظاہرہ کیا۔

پیونگ یانگ نے پہلے ہی خبردار کیا تھا کہ اگر سیئول نے کارکنوں کو آگے بڑھنے سے نہیں روکا تو اس کے خطرناک نتائج سامنے آئیں گے۔

اس دوران دونوں طرف سے سرحدوں پر وقفے وقفے سے فائرنگ کی گئی، تاہم کسی قسم کے نقصان کی اطلاع موصول نہیں ہوئی۔

جنوبی کوریا کی نیوز ایجنسی یون ہاپ نے فوجی آفیسرز کے حوالے سے کہا ہے کہ شمالی کوریا کی طرف سے غباروں پر فائرنگ کی گئی جس کے بعد جنوبی کوریا کی طرف سے سرحد پر فائرنگ کی گئی، لیکن فوری طور پر کسی جانی نقصان کا پتہ نہیں چل سکا۔

یہ تصادم اس وقت ہوا ہے جب شمالی کوریا حکمران پارٹی کے 69 سال پورے ہونے کا جشن منا رہی ہے۔

میڈیا کو جو فہرست ملی ہے، اس کے مطابق مسٹر کم اس پروگرام میں شریک نہیں تھے اور انھیں ایک مہینے سے پبلک میں نہیں دیکھا گیا۔

اسی بارے میں