لیبیا میں جنگ بندی کے لیے مغربی ممالک کی اپیل

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption لیبیا میں سنہ 2011 میں کرنل معمر قذافی کو اقتدار سے معزول کیے جانے کے بعد سے ملک میں عدم استحکام کی صورتِ حال ہے۔

امریکہ اور اس کے چار یورپی حلیفوں برطانیہ، فرانس، جرمنی اور اٹلی نے افریقی ملک لیبیا میں فوری طور جنگ بندی کی اپیل کی ہے۔

ان پانچوں ممالک نے ایک بیان میں کہا ہے کہ لیبیا کے بحران کا ’کوئی فوجی حل نہیں‘ ہے۔

لیبیا کے مشرقی شہر بن غازي میں اسلام پسند باغیوں اور فوج کے درمیان جاری کشمکش میں حالیہ دنوں کے دوران درجنوں افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

لیبیا میں سنہ 2011 میں کرنل معمر قذافی کو اقتدار سے معزول کیے جانے کے بعد سے ملک میں عدم استحکام کی صورتِ حال ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ اگر مقامی اور بین الاقوامی شدت پسند قووتوں کو لیبیا میں پناہ ملتی رہی تو انتہائی جانفشانی سے حاصل کی جانے والی آزادی کو دوبارہ خطرہ لاحق ہو سکتا ہے۔

بیان کے مطابق صرف جمہوری طریقے سے منتخب حکومت کے سامنے جوابدہ سکیورٹی فورسز ہی ملک کو درپیش سکیورٹی چیلنجز کا سامنا کرنے کی اہل ہو سکتی ہیں۔

ان ممالک نے اسلام پسند باغیوں کے خلاف ریٹائرڈ جنرل خلیفہ حفتر کے بدھ سے شروع ہونے والے آپریشن پر بھی تشویش کا اظہار کیا ہے۔

لیبیا میں انصار الشریعہ شریعہ سمیت کئی شدت پسند تنظیموں کو امریکہ کے علاوہ ديگر کئی ممالک میں شدت پسند تنظیموں کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے۔

اسی بارے میں