دس چیزیں جن سے ہم لاعلم تھے

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

آئرلینڈ کے گلوکار بونو کے مطابق وہ آنکھوں کی بیماری موتیا کی وجہ سے رنگدار شيشوں یا دھوپ سے بچنے کی عینک استعمال کرتے ہیں۔

مزید جاننے کے لیےکلک کریں

ایکس فیکٹر کے ادارکار سائمن کوویل کے مطابق ایکس فیکٹر کے مناظر کی ایڈیٹنگ کرنے والے افراد کے لیے ان کے دو الفاظ ہوتے ہیں: ایک خوش اور دوسرا خوب رو۔

مزید جاننے کے لیےکلک کریں

امریکہ میں ہائی سکول کے اساتذہ سے زیادہ نجی سکیورٹی گارڈ بھرتی کیے جاتے ہیں۔

مزید جاننے کے لیےکلک کریں

سنہ 60 کی دہائی میں سپین کی شراب تیار کرنے والی کمپنی ڈئم اپنی بیئر کی تشہیر سارے خاندان کے لیے کرتی تھی جس میں بچے بھی شامل ہوتے تھے۔

مزید جاننے کے لیےکلک کریں

کوپن ہیگن میں لوگوں سے زیادہ سائیکلیں ہے۔

مزید جاننے کے لیےکلک کریں

کچھوا ایک بار پلاسٹک کا لفافہ کھانا شروع کر دے تو اس کے لیے اسے واپس اگلنا مشکل ہوتا ہے۔

مزید جاننے کے لیےکلک کریں

رواں صدی تک ہسپانوی انگور کی قسم ’ایرن‘ دنیا بھر میں سب سے زیادہ کاشت کیے جانے والا انگور تھا۔

مزید جاننے کے لیےکلک کریں

حملہ آور حشرات جو پہلے نیدرلینڈ سے برطانیہ 30 سال میں پہنچتے تھے، اب پانچ سال میں پہنچ سکتے ہیں۔

مزید جاننے کے لیےکلک کریں

انگلش فٹبال کلبوں میں پیسٹری کی ایک قسم پائی سب سے مہنگی براٹن اور ہوو ابئین میں ملتی ہے جبکہ سب سے سستی روچڈئیلز میں ملتی ہے۔

مزید جاننے کے لیےکلک کریں

پاستا کو ٹھنڈا کرنے کے بعد دوبارہ گرم کر کے کھایا جائے تو اس سے موٹاپا کم ہوتا ہے۔

مزید جاننے کے لیےکلک کریں

اسی بارے میں