24 یورپین بینکوں کی ’مالی صحت‘ خراب

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption یورپین یونین سنہ 2008 کے بعد مالی بحران کا شکار ہو گئی تھی

یورپین بینکنگ اتھارٹی نے اعلان کیا ہے کہ بینکوں کی مالی حالت کے بارے میں کرائے گئے ایک جائزے میں یورپ کے 24 بینک فیل ہو گئے ہیں۔

مالی حالت کے بارے میں ٹیسٹ میں فیل ہونے والے بینکوں کو اپنی مالی پوزیشن نو مہینوں میں بہتر کرنا ہو گی وگرنہ ان کو اپنا کاروبار معطل کرنا پڑسکتا ہے۔

فیل ہونے والے بینکوں میں نو اطالوی، تین یونانی اور تین قبرص کے بینک شامل ہیں۔

یورپین بینکنگ اتھارٹی نے یورپ کے 123 بینکوں کی مالی صحت کے بارے میں ٹیسٹ کرایا تھا تاکہ یہ اندازہ کیا جا سکے کہ کیا یہ بینک کسی مالی بحران کا سامنا کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں یا نہیں۔

یہ جائزہ سنہ دو ہزار تین کے اختتام پر ان بینکوں کی مالی صحت کے بارے میں دستیاب اعداد و شمار کی بنیاد پر کیا گیا تھا۔

اس دوران دس بینکوں نے اپنی مالی صحت کو کسی حد تک بہتر کر لیا ہے۔

بی بی سی عالمی سروس کے معاشی امور کے نامہ نگار اینڈریو والکر کا کہنا ہے کہ یورو زون کے مالی بحران میں سب سے زیادہ تشویشناک بات بینکوں کی مالی حالت تھی۔

اس جائزے میں چار برطانوی بینک، رائل بینک آف سکاٹ لینڈ، ایچ ایس بی سی، لائڈز بینکنگ گروپ اور بارکلیز بھی شامل کیے گئے تھے۔ یہ چاروں بینک اس جائزے میں کامیاب قرار دیے گئے لیکن لائڈز بہت کم فرق سے اس ٹیسٹ پر پورا اترا۔

اس کے ساتھ ہی یورپین سینٹرل بینک نے بھی ایک سو تیس بینکوں کا علیحدہ سے جائزہ لیا۔ یورپین سینٹرل بینک نے کہا کہ 25 بینک اس جائزہ میں فیل ہوگئے لیکن ان میں سے 12 ایسے ہیں جنہوں نے اپنی مالی حالت کو بہتر کر لیا ہے۔