عراقی افواج بیجی آئل ریفائنری تک پہنچ گئیں

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption دولتِ اسلامیہ نے عراق کے تیل صاف کرنے کے سب سے بڑے کارخانے بیجی کا گذشتہ پانچ مہینوں سے محاصرہ کر رکھا ہے

عراق میں حکام کے مطابق سرکاری فوج بیجی میں دولتِ اسلامیہ کے جنگجوؤں کو پسپا کرنے کے بعد تیل صاف کرنے کے سب سے بڑے کارخانے تک پہنچ گئی ہے۔

عراقی جنرل عبدالوہاب نے سرکاری ٹی وی کو بتایا کہ یہ لمحہ عراق کے تیل کے کارخانے کو آزاد کراونے کے لیے کلیدی ہو سکستا ہے۔

خیال رہے کہ عراق کے تیل صاف کرنے کے سب سے بڑے کارخانے پر گذشتہ پانچ مہینوں سے دولتِ اسلامیہ قبضہ کر رکھا ہے۔

تیل صاف کرنے کے کارخانے بیجی کی حفاظتی فورس کے پولیس کرنل صالح جابر نے برطانوی خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا کہ عراق کی انسدادِ دہشت گردی کی فورس منگل کو بیجی میں داخل ہوئی۔

ان کا کہنا تھا کہ عراقی افواج نے جمعے کو دارالحکومت بغداد کے شمال میں واقع شہر بیجی کا دوبارہ کنٹرول سنھبالا۔

برطانوی خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق عراقی کے جنگی طیاروں نے دولتِ اسلامیہ کے بھاگتے ہوئے جنگجوؤں کو نشانہ بنایا۔

بغداد میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار کا کہنا ہے عراقی افواج کا بیجی شہر پر دوبارہ کنٹرول حاصل کرنا دولتِ اسلامیہ کے خلاف لڑائی میں ٹرننگ پوائنٹ ثابت ہو سکتا ہے۔

ایک عراقی صحافی کا کہنا ہے کہ سکیورٹی فورسز نے ’بیجی کے کارخانے کو دولتِ اسلامیہ کا قبرستان‘ بنا دیا۔

دولتِ اسلامیہ نے رواں برس جون سے عراق کے وسیع علاقوں پر قبضہ کر رکھا ہے اور امریکہ اور اس کے اتحادی عراقی اور کرد افواج کی مدد کے لیے دولتِ اسلامیہ کے خلاف فضائی کارروائی میں مصروف ہیں اور گذشتہ دو مہینوں میں دولت اسلامیہ کے ٹھکانوں پر سینکڑوں فضائی حملے کیے جا چکے ہیں۔

اسی بارے میں