اشتہارات کےبغیر ویب سائٹیں دیکھنا ممکن ہوگیا

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ’ کونتریبٹور‘ کو ملنے والی رقم کا ایک حصہ گوگل کو جاتا ہے

گوگل نے ایک ایسے منصوبے کا اعلان کیا ہے جو انٹرنیٹ استعمال کرنے والوں کو اشتہارات کے بغیر ویب سائٹیں دیکھنے کی سہولت فراہم کرتا ہے۔

’ کنٹریبیٹور‘ نامی سروس کو صارفین ایک سے تین ڈالر کی ماہانہ فیس دے کر اشتہارات کے بغیر ویب سائٹیں دیکھ سکیں گے۔

اس سہولت کو استعمال کرنے والے صارفین جب اس سکیم کے ساتھ جڑی ہوئی کس بھی ویب سائٹ کا دورہ کریں گے تو اشتہارات کے بجائے انھیں ’پکسلیٹڈ‘ یا مختلف حصوں میں تقسیم ہوئے نمونے نظر آئیں گے۔

کنٹریبیٹور اپنے نظام کی آزمائش کرنے کے لیے ’سائنس ڈیلی‘ اور ’اربن ڈکشنری‘ جیسی کچھ ویب سایٹوں کے ساتھ کام کر رہا ہے۔

آزمائشی بنیاد پر دیگر ویب سائٹس، وکی ییڈیا، میش ایبل اورامگر بھی اس پروجیکٹ میں شامل ہیں۔

اس سروس تک رسائی ابھی صرف دعوت کے طور پر مل سکتی ہے اور اس میں دلچسپی لینے والی ویب سائٹسں اس کو استعمال کرنے کےلیے درخواستیں دے سکتی ہیں۔

کنٹریبیٹور کا کہنا ہے کہ فیس کے عوض ویب تک رسائی کو ایک تجربے کے دیکھا جا رہا ہے۔

’آج کل استعمال ہونے والا انٹرنیٹ زیادہ تر اشتہارات کے ذریعے چلتا ہے۔ لیکن اگر آپ ان لوگوں کی براہ راست مدد ہو سکے جو ہمارے لیے یہ ویب سائٹسں بناتے ہیں، تو کیا وہ طریقہ اپنائیں گے؟‘

’ کنٹریبیٹور‘ کو ملنے والی رقم کا ایک حصہ گوگل کو جاتا ہے اور کچھ حصہ اس ویب سائٹ کو جو اس کی سہولت استعمال کرتی ہے۔

صارفین اس سروس کو اپنےگوگل اکاؤنٹ کے ذریعےحاصل کریں گے جو پھر ان کی مطلب کی ویب سائٹوں کو اشتہارات کے بغیر دکھائی گی۔

ویب سائٹوں کے اشتہارات کو انٹرایکٹو گیمز میں تبدیل کرنے والی ویب سائٹ ’ایڈ لوڈیو‘ کے شریک بانی ہاورڈ کنگسٹن کا خیال ہے کہ آن لائن اشتہارات کو ایک نئی پہچان کی ضرورت ہے۔

انھوں نے کہا کہ: ’کچھ لوگوں کو آن لائن اشتہارات زہر لگتے ہیں لیکن اب کچھ نئے ماڈل سامنے آئے ہیں جو ناشر کی دنیا اور صارفین کا رویے بدل دیں گے۔‘

’وال سٹریٹ جرنل‘ اور ’دا ٹائمز‘ جیسی کچھ ویب سائٹیں پہلے سے ہی ’سبسکرپشن‘ یا پیسے دے کر استعمال کرنے والی ویب سائٹیں چلا رہی ہیں۔ لیکن یہ ویب سائٹسں اب بھی اشتہارات دکھاتی ہیں۔

کنٹریبیٹور جیسی ایک سروس ’ریڈابِلیٹی‘ ماضی میں شروع ہوئی تھی لیکن سنہ 2012 میں بند ہوگئی۔

اسی بارے میں