نائیجیریا: مارکیٹ میں دو خودکش دھماکے، 78 ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption دھماکوں کی ذمہ داری کسی تنظیم نے قبول نہیں کی ہے تاہم شک ظاہر کیا جا رہا ہے کہ اس کے پیچھے شدت پسند تنظیم بوکو حرام کا ہاتھ ہو گا

افریقی ملک نائیجیریا کے شمالی شہر میدوگری میں طبی عملے کا کہنا ہے کہ دو خودکش حملوں میں 78 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق یہ خودکش دھماکے دو خواتین نے کیے۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ پہلے ایک نوجوان لڑکی نے اپنے آپ کو دھماکے سے اڑایا اور جب لوگ متاثرین کی مدد کے لیے پہنچے تو دوسری خاتوان خود کش بمبار نے اپنے آپ کو اڑا دیا۔

ان دھماکوں کی ذمہ داری کسی تنظیم نے قبول نہیں کی ہے تاہم شک ظاہر کیا جا رہا ہے کہ اس کے پیچھے شدت پسند تنظیم بوکو حرام کا ہاتھ ہو گا۔

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

اطلاعات کے مطابق حجاب لیے ہوئے دو لڑکیاں مصروف مارکیٹ میں داخل ہوئیں اور یکے بعد دیگرے اپنے آپ کو دھماکے سے اڑا دیا۔

عینی شاہد کا کہنا ہے کہ پہلے دھماکے میں تین خواتین ہلاک ہوئیں اور جب لوگ زخمیوں کی مدد کے لیے جمع ہوئے تو دوسری خود کش بمبار لڑکی نے اپنے آپ کو اڑا دیا۔

انسیانی حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل کا کہنا ہے کہ بوکو حرام کے حملوں میں 2014 میں اب تک کم از کم 1500 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

بوکو حرام سنہ 2002 میں قائم ہونے کے بعد بورنو ریاست کے شہر میدوگری میں اس کا مرکز تھا لیکن نائیجیریا کی فوج اور رضا کاروں نے اس تنظیم کو اس شہر سے باہر نکال دیا۔

بوکو حرام کا اب بھی بورنو کے کئی قصبوں اور دیہاتوں پر قبضہ ہے۔ حکام خدشہ ظاہر کرتے ہیں کہ بوکو حرام میدوگری پر دوبارہ قبضے کی تیاریاں کر رہا ہے۔

اسی بارے میں