کینیا: الشباب نے 36 غیر مسلم کان کنوں کو قتل کردیا

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption کینیا کی عیسائی برادری میں ان حملوں کے خلاف زبردست غم و غصہ پایا جاتا ہے

افریقی ملک کینیا کے شہر منڈیرا میں حکام کا کہنا ہے کہ صومالیہ کی شدت پسند تنظیم الشباب نے کم از کم 36 کھدائی کرنے والے مزدوروں کو گولی مار کر ہلاک کر دیا ہے۔

مقامی باشندوں نے بتایا کہ حملہ آوروں نے پہلے مسلمانوں اور غیر مسلموں کو علیحدہ کیا اور پھر عیسائیوں کو گولی مار دی۔

اس سے قبل منڈیرا کے پڑوسی ضلعے میں غیر مسلموں میں مقبول ایک شراب خانے میں ایک شخص کو گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا تھا۔

گذشتہ ہفتے پڑوسی ملک صومالیہ کی اسلام پسند جنگجو تنظیم الشباب نے کینیا کے اسی علاقے میں ایک بس پر حملہ کر کے 28 غیر مسلموں کو قتل کر دیا تھا۔

کھدائی کرنے والے مزدوروں پر حملہ منگل کی صبح کیا گيا۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ ان افراد کو آدھی رات کو اس وقت پکڑ لیا گیا جب وہ اپنے خیموں اور کانوں میں سو رہے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ b
Image caption گذشتہ ہفتے بس پر کیے جانے حملے میں 28 افراد مارے گئے تھے

ایک مقامی پولیس چیف نے کہا کہ قاتلوں نے منڈیرا شہر سے 15 کلومیٹر کے فاصلے پر کورمی کی کان کے پاس غیرمسلم مزدوروں کو نشانہ بنایا۔

کینیا میں سرگرم عالمی تنظیم ریڈ کراس نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ ان کی ٹیم کا ایک رکن اور سکیورٹی اہلکار جائے حادثہ پر موجود ہیں۔

واضح رہے کہ الشباب نے سنہ 2011 کے بعد سے کینیا پر حملوں میں اضافہ کر دیا ہے کیونکہ کینیا نے جنگجوؤں کے خلاف صومالیہ کی امداد کے لیے فوج بھیجی تھی۔

اسی بارے میں