برطانیہ میں صدیوں پرانے قوانین کی منسوخی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption میگنا کارٹا جون 1215 میں تیار کیا گیا تھا لیکن اسے 1297 میں انگلش قانون میں شامل کیا گیا

برطانیہ کے قانون کی کتابوں میں درج ابھی تک لاگو ہونے والے بعض قدیم قوانین کو 747 سال بعد منسوخ کیا جا رہا ہے۔

سنہ 1267 میں برطانوی شہنشاہ ہنری سوم کے زمانے میں پاس ہونے والے مارلبرو قانون کی 29 میں سے صرف چار شقیں ابھی تک لاگو ہیں جن میں سے مزید دو کو منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

قرض کی بازیابی سے متعلق قدیم قانون کی ان دو شقوں کو نیا قانون بننے کی وجہ سے اضافی سمجھا جا رہا ہے جسے اب منسوخ کرنے کا منصوبہ ہے۔

یہ قانون برطانوی لا کمیشن کی طرف سے منسوخی کے لیے پیش کیے جانے والے درجنوں قوانین میں سے ہیں۔

مارلبرو قانون کو ایکٹ آف پارلیمنٹ یا پارلیمانی کے پہلی ایکٹ کے تحت صرف 32 سال کے لیے منظور کیا گیا تھا۔

لا کمیشن کے جان سنڈرز نے کہا کہ ’جب ہم اس قانون کو منسوخ کرتے ہیں تو ہم قانون کی کتابوں میں موجود قدیم ترین قانون کو منسوخ کر رہے ہیں۔‘

انھوں نے مزید کہا کہ ’مجھے شبہ ہے کہ بہت سے وکلا اس قانون سے لاعلم ہیں۔ لوگوں نے میگنا کارٹا کے بارے میں سنا ہے لیکن یہ قانون میرے جیسے قانون کے تاریخ دانوں کے لیے دلچسپی کا باعث ہو سکتا ہے۔‘

سٹیچیوٹ آف مارلبرو کے ابھی تک لاگو ہونے والی شقیں زمینداروں کے ان قدیم اختیارات سے متعلق ہیں جنھیں استعمال کرتے ہوئے وہ مقروض کی جائیداد میں مداخلت کر کے اس کی اشیا پر قبضہ کر سکتا تھا۔

لیکن زمینداروں کے ان قدیم اختیارات کو ٹرببیونلوں اور عدالتوں نے حصوں میں ختم کیا، جس کے بعد مارچ میں لاگو ہونے والے انفورسمنٹ ایکٹ کے ذریعے مکمل طور پر ختم کر دیا گیا۔

لا کمیشن کا خیال ہے کہ اب اس قانون کی ان دو شقوں کی ضرورت نہیں رہی۔

تاہم اس قانون کی تیسری اور چوتھی شق پر عمل درآمد ہوتا رہے گا۔ اس قانون کی تیسری شق کسی شخص کو عدالت کے حکم کے بغیر قرض ادا نہ کرنے کی صورت میں مقروض سے انتقام لینے سے روکتی ہے، جبکہ چوتھی شق کرایہ داروں کو اپنی جائیداد کو خراب کرنے اور بیچنے سے روکتی ہے۔

اسی بارے میں