مونگ پھلیوں کی وجہ سے جہاز رکوانے والی عہدیدار مستعفی

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption جہاز پر موجود ایک نئے سٹیورڈ نے ہیدر چو کو مونگ پھلی پلیٹ کی بجائے پیکٹ میں پیش کی تھی

پرواز سے قبل مناسب طریقے سے مونگ پھلیاں پیش نہ کیے جانے پر نیویارک سے سیؤل کی پرواز ملتوی کروانے والی جنوبی کوریا کی ایک فضائی کمپنی کی اعلیٰ عہدیدار نے استعفیٰ دے دیا ہے۔

ہیدر چو کوریئن ایئر کی وائس پریزیڈنٹ ہیں اور ہوائی کمپنی کے صدر کی بیٹی ہیں۔

اطلاعات کے مطابق انھوں نے جہاز کی روانگی میں اس لیے تاخیر کرائی کہ جس طرح سے سٹیورڈ نے انھیں جہاز میں مونگ پھلیاں پیش کیں، وہ طریقہ انھیں پسند نہیں آیا۔

یہ واقعہ نیویارک کے ہوائی اڈے پر گذشتہ جمعے کو پیش آیا۔ جہاز نیویارک سے جنوبی کوریا کے لیے روانہ ہونے والا تھا کہ اسے واپس ٹرمینل پر لے جایا گیا۔

ہیدر چو نے مطالبہ کیا کہ مونگ پھلی غلط طریقے سے پیش کرنے پر جہاز کے عملے کو تبدیل کیا جائے۔

کوریئن ایئر کا کہنا ہے کہ جہاز پر سروس کے معیار کی نگرانی کرنا ہیدر چو کی ذمہ داری تھی اور اس سلسلے میں ان کو پائلٹ کی حمایت بھی حاصل تھی۔

تاہم حکام کا کہنا ہے کہ ہیدر جہاز میں بطور مسافر سوار تھیں۔

جنوبی کوریا کے مقامی میڈیا کا کہنا ہے کہ جہاز پر موجود ایک نئے سٹیورڈ نے ہیدر کو مونگ پھلی پلیٹ کی بجائے پیکٹ میں پیش کی تھی۔

ہیدر نے سینیئر سٹیورڈ کو طلب کیا اور سروس کے بارے میں دریافت کیا اور حکم دیا کہ سینیئر سٹیورڈ کو جہاز سے اتار دیا جائے۔

کوریئن ایئر کا کہنا ہے کہ جہاز کی روانگی میں 11 منٹ کی تاخیر ہوئی۔

جنوبی کوریا کے ایوی ایشن حکام اس بات کی تحقیقات کر رہے ہیں آیا ہیدر چو نے کوئی قانون توڑا یا نہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ ہیدر بطور مسافر جہاز پر سوار ہوئی تھیں نہ کہ ایئر لائن کی سروس چیک کرنے کے لیے۔

اسی بارے میں