امریکہ میں 11 کھرب ڈالر کے متنازع بجٹ کی منظوری

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption بجٹ میں مالی ضابطوں میں نرمی کا ایک نکتہ شامل کیا گيا ہے

امریکی سینیٹ نے ملک کے 11 کھرب ڈالر کے متنازع وفاقی بجٹ کی منظوری دے دی ہے جس کے بعد اب اسے صدر براک اوباما کے پاس دستخط کے لیے بھیجا جائے گا۔

سینیٹ نے سنیچر کو رات گئے اسے 40 کے مقابلے 56 ووٹوں سے منظور کیا۔

اس بجٹ پر مہینوں سے سیاسی جماعتوں کے مابین زبردست بحث و مباحثہ جاری رہا اور اس دوران ڈیموکریٹس اور ری پبلکنز دونوں جانب سے لچک بھی دکھائی گئی۔

اس کی منظوری سے امریکہ میں حکومت کے ’شٹ ڈاؤن‘ کا خطرہ ٹل گیا ہے جو کہ آئندہ ہفتے سے شروع ہو سکتا تھا۔

حزبِ مخالف کی جماعت ری پبلکن پارٹی صدر اوباما پر متنازع امیگریشن اصلاحات کو ترک کرنے پر زور دیتی رہی اور اس کے لیے انھوں نے داخلی سلامتی کے محکمے کے لیے جزوی فنڈنگ کی ہی منظوری دی۔

واضح رہے کہ جنوری کے بعد سے دونوں ایوانوں میں ری پبلکنز کی اکثریت ہوگی جس کے بعد انھیں امید ہے کہ وہ غیر قانونی طور پر امریکہ آنے والے بعض تارکین وطن کوصدر اوباما کی جانب سے دیے جانے والے استثنیٰ کے پروگرام کو روک دیں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ایوان میں ڈیموکریٹ کی رہنما نینسی پیلوسی صدر اوبامہ کی استثنی کی پالیسی کے خلاف ہیں

دوسری جانب ڈیموکریٹس مالی ضابطے کی شق کے ہٹائے جانے پر ناخوش تھے لیکن بعض لوگوں کا کہنا ہے کہ اس کی موجودگی میں بل کا منظور کرایا جانا مشکل تھا اور آئندہ سال ڈیموکریٹس کے لیے سودا کرنا بھی مشکل ہو جاتا۔

ایوان نمائندگان میں یہ متنازع بل جمعرات کو ہی منظور ہو گیا تھا۔

حکومتی شٹ ڈاؤن کا وقت تیزی سے قریب آنے کے سبب کانگریس نے دو بار ایمرجنسی فنڈنگ بل منظور کیا تھا تاکہ وفاقی بجٹ کے لیے سمجھوتے کو ذرا وقت مل سکے۔

اس بجٹ میں صدر اوباما کی درخواست پر منظور کی جانے والی ایمرجنسی فنڈنگ، مغربی افریقہ میں ایبولا وائرس سے لڑنے کے لیے فنڈ اور عراق و شام میں دولت اسلامیہ کے خلاف فضائی حملے کے لیے پیسے بھی شامل ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption سینیٹر الزابتھ وارین مالی ضابطوں میں نرمی کے سخت خلاف ہیں

1600 صفحات پر مشتمل اس بجٹ بل میں دونوں پارٹیوں نے اپنے اپنے حق میں ووٹ حاصل کرنے کے لیے بہت سی چیزیں شامل کرائی ہیں۔

کوئی شخص کسی قومی سطح کی پارٹی کو پہلے زیادہ سے زیادہ 32،400 ڈالر تعاون دے سکتا تھا جسے اب بڑھا کر 324،000 ڈالر کر دیا گیا ہے۔

اس کے تحت ڈسٹرکٹ کولمبیا کو منشیات کو قانونی بنانے کا نظام قائم کرنے کے لیے اپنے فنڈ کے استعمال سے باز رکھنے کی کوشش کی گئی ہے

اس کے علاوہ بعض ماحولیاتی تحفظ ایجنسی (ای پی اے) کے ضابطوں کو روکنا، ای پی اے اور امریکی ٹیکس ایجنسی کے بجٹ میں کٹوتی، اور سکیوریٹیز اور ایکسچینج کمیشن کے ساتھ ساتھ وال سٹریٹ کی ضابطہ کار ایجنسیوں کے بجٹ میں اضافہ وغیرہ اس بجٹ میں شامل ہیں۔

اسی بارے میں