’نعرۂ تکبیر کے بعدگاڑی چڑھا دی‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اس شخص نے شہر کے پانچ مختلف حصوں میں پیدل چلنے والوں پر گاڑی چڑھائی

فرانسیسی میڈیا کے مطابق فرانس کے شہر ڈیژوں میں ایک شخص نے اپنی گاڑی پیدل چلنے والے افراد پر چڑھا دی جس کے نتیجے میں گیارہ افراد زخمی ہوئے ہیں۔

فرانسیسی میڈیا کے مطابق اس شخص نے پیدل چلنے والے افراد پر گاڑی چڑھانے سے قبل ’نعرہ تکبیر‘ بلند کیا۔

اس شخص نے شہر کے پانچ مختلف حصوں میں پیدل چلنے والوں پر گاڑی چڑھائی۔

پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ شخص ذہنی طور پر ٹھیک نہیں ہے اور وہ نفسیاتی علاج کے غرض سے ہسپتال میں داخل رہا ہے۔

عینی شاہدین نے پولیس کو بتایا کہ اس 40 سالہ شخص نے کہا کہ وہ فلسطینی بچوں کے لیے یہ قدم اٹھا رہا ہے۔

واضح رہے کہ فرانس میں دو روز میں یہ دوسرا واقعہ ہے جس میں حملہ آور نے ’نعرہ تکبیر‘ بلند کیا ہو۔

یاد رہے کہ ہفتے والے روز فرانس کے شہر ٹور میں ایک شخص کو اس وقت گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا جب اس نے پولیس پر چاقو سے حملہ کیا۔

پولیس کے مطابق اس شخص نے ٹور کے پولیس سٹیشن میں ’نعرہ تکبیر‘ بلند کیا اور پولیس اہلکاروں پر حملہ کیا جس کے نتیجے میں تین اہلکار زخمی ہوئے۔

پولیس نے حملہ آور کو گولی مار کر ہلاک کردیا۔

فرانسیسی میڈیا کے مطابق حملہ آور افریقی ملک برنڈی میں پیدا ہوا لیکن فرانسیسی شہری تھا۔