نیویارک: حملہ آور نے کہا تھا، ’دیکھو میں کیا کرنے والا ہوں‘

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption مرنے والے پولیس افسران ایشیائی اور ہسپانوی تھے

امریکی شہر نیویارک میں پولیس حکام کا کہنا ہے کہ دو پولیس اہلکاروں کو قتل کرنے والے شخص سے حملہ کرنے سے قبل فخریہ انداز میں کہا تھا کہ ’دیکھو میں کیا کرنے والا ہوں۔‘

28سالہ اسماعیل برنزلی کے بارے میں کہا جاتا ہےکہ کہ ماضی میں بھی وہ ذہنی عدم توازن اور تشدد کا شکار رہے ہیں۔

دونوں پولیس اہلکاروں 32 سالہ لیو وینجن اور 40 سالہ رافیئل راموس کی یاد میں چراغاں کیا گیا۔

یہ واقعہ سنیچر کو بروکلِن میں پیش آیا جب ایک حملہ آور نے پولیس کی گاڑی میں بیٹھے دو اہلکاروں کوگولی مار کر خودکشی کر لی۔

پولیس کا مزید کہنا تھا کہ حملے سے چند گھنٹے قبل برنزلی نے بالٹیمور نامی علاقے میں اپنی سابق 29 سالہ گرل فرینڈ کو بھی گولی مار کر زخمی کر دیا تھا۔

محکمہ پولیس کے سربراہ رابرٹ بوئس کا کہنا تھا کہ اس حملے سے چند ہفتے قبل برنزلی نے اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ پر پولیس اور حکومت مخالف پوسٹیں شائع کی تھیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption 28سالہ اسماعیل برنزلی کے ماضی میں بھی ذہنی عدم توازن اور تشدد کے حوالے معاملات موجود ہیں

اسماعیل برنزلی کی حملے سے قبل دو آدمیوں سے گفتگو ہوئی جس میں اس نے انھیں انسٹاگرام پر اسے فالو کرنے کو کہا اور پھر کہا، ’دیکھو کہ میں کیا کرتا ہوں۔‘

پولیس چیف بوئس کے مطابق اس کے بعد وہ پولیس اہلکاروں کی گاڑی کے پاس سے گزرا، اس نے چکر کاٹا اور سڑک پار کر کے گاڑی کے پیچھے گیا۔

برنزلی تھوڑی دور اس سڑک پر چلا اور پھر پیسنجر سیٹ کی طرف کی کھڑکی سے گولیاں چلائیں جو دونوں اہلکاروں کو لگیں۔ جس کے بعد وہ وہاں سے بھاگ گیا۔

حملے کی مذمت

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption پولیس اہلکاروں کی ہلاکت کا واقعہ ایک ایسے وقت پیش آیا ہے جب شہر کی پولیس کے رویے اور ملزمان سے نمٹنے کے طریقوں کی کڑی جانچ جاری ہے

اس سے پہلے امریکہ کے صدر براک اوباما نے بھی پولیس اہلکاروں کی ہلاکت کے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے کہا تھا کہ واقعے کا کوئی جواز نہیں بنتا۔

نیویارک کے میئر بل ڈی بلازیو کا کہنا ہے کہ یہ واضح طور پر قتل کا معاملہ ہے اور سارا شہر ان ہلاکتوں پر سوگوار ہے۔

یہ نیویارک میں گذشتہ تین برس میں کسی پولیس اہلکار کی ہلاکت کا پہلا واقعہ ہے۔

لیو وینجن اور رافیئل راموس نامی پولیس اہلکاروں کو سنیچر کی سہ پہر اس وقت نشانہ بنایا گیا جب وہ گشت سے لوٹے تھے۔ حملے کے فوری بعد انھیں ہسپتال منتقل کیا گیا لیکن وہ جانبر نہ ہو سکے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ حملہ آور ایک سیاہ فام تھا جبکہ مرنے والے پولیس افسران ایشیائی اور ہسپانوی تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سنیچر کو دونوں پولیس اہلکاروں 32 سالہ لیو وینجن اور 40 سالہ رافیئل راموس کی یاد میں چراغاں کیا گیا

اسی بارے میں