تائیوان کے سابق صدر کی رہائی ٹریفک جام کی وجہ سے ملتوی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption تائیوان کےسابق صدر منی لانڈرنگ کے الزام میں 20 سال کی جیل کاٹ رہے ہیں

تائیوان کے سابق صدر کی رہائی سے متعلق کاغذات کو جیل لے کر جانے والے پیغام رساں کے ٹریفک میں پھنس جانے کی وجہ سے سابق صدر کی رہائی ملتوی ہوگئی ہے۔

سابق صدر چن شی بدعنوانی کے جرم میں قید ہیں۔ ان کو سالِ نو کی شام پر طبی بنیاد پر پیرول پر رہا کیے جانے کی توقع کی جا رہی تھی۔

لیکن چھٹیوں کی ٹریفک کی وجہ سے ان کی رہائی سے متعلق کاغذات دیر سے جیل میں پہنچے جس پر غور کرنے کے لیے بہت دیر ہو گی۔

سابق صدر کی پیرول کی درخواست پر اب پیر کو غور کیا جائے گا۔

مسٹر چن کی حمایت کے لیے تقریباً 300 لوگ جیل کے باہر کھڑے تھے۔

وزارت انصاف نے دوپہر کو مسٹر چن کی طبی بنیادوں پر پیرول پر رہائی سے متعلق کاغذات جیل روانہ کیے لیکن چھٹیوں کی ٹریفک کی وجہ سے کاغذات دیر سے پہنچےجس کی وجہ سے حکام کو ان کاغذات پر غور کرنے کا وقت نہیں ملا۔

حکومتی ترجمان کا کہنا تھا کہ سابق صدر کی رہائی کی درخواست کو نئے سال کی چھٹیوں کے بعد اب پیر کے دن نمٹایا جائے گا۔

مسٹر چن منی لانڈرنگ کے جرم میں 20 سال قید کاٹ رہے ہیں۔ انھیں صدارت کی دوسری ٹرم کے اختام پر ہی مجرم قرار دے دیا گیا تھا۔

سابق صدر کے صحت ٹھیک نہیں ہے اور وہ ڈپریشن اور پارکنسن جیسی بیماریوں کا شکار ہیں۔انھوں نے حکام کو طبی بینادوں پر رہائی کی درخواست کی تھی۔ پچھلے سال انھوں نے خود کشی کی بھی کوشش کی۔

مسٹر چن کے حامیوں کا کہنا ہے کہ ان خلاف قائم مقدمات کے سیاسی محرکات ہیں۔ سابق نائب صدر مس لو نے اسی سلسلے میں مسٹر چن کی صحت کی طرف توجہ دلانے کے لیے بھوک ہڑتال کی تھی۔

اسی بارے میں