انڈونیشیا: ایئر ایشیا کے جہاز کا پچھلا حصہ مل گیا

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ایئر ایشیا کا یہ جہاز 28 دسمبر کو انڈونیشیا کے دوسرے بڑے شہر سورابایا سے سنگاپور جا رہا تھا کہ خراب موسم کے دوران گر کر تباہ ہو گیا

انڈونیشیا سے سنگاپور جانے والے ایئر ایشیا جہاز کے ملبے کی تلاش کے سرچ اور ریسکیو مشن کے سربراہ کا کہنا ہے کہ بحیرہ جاوا میں جہاز کا پچھلا حصہ مل گیا ہے۔

جہاز کے پچھلے حصے میں بلیک باکس اور فلائیٹ ریکارڈر ہوتے ہیں جس سے تفتیش کاروں کو اس جہاز کے تباہ ہونے کی وجہ معلوم ہو سکے گی۔

ایئر ایشیا کا یہ جہاز 28 دسمبر کو انڈونیشیا کے دوسرے بڑے شہر سورابایا سے سنگاپور جا رہا تھا کہ خراب موسم کے دوران گر کر تباہ ہو گیا۔ جہاز پر 162 افراد سوار تھے۔

جہاز کے ملبے کی تلاش کے سرچ اور ریسکیو مشن کے سربراہ بمبانگ سولیئستو نے جکارتہ میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا: ’ہمیں جہاز کا پچھلا حصہ مل گیا ہے جس کی ہمیں تلاش تھی۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’غوطہ خوروں نے جہاز کے پچھلے حصے یعنی دم کی نشاندہی کی ہے جو بہت اہم پیش رفت ہے۔‘

اب تک ریسکیو ٹیموں نے 40 لاشیں سمندر سے برآمد کر لی ہیں۔ حکام کا اندازہ ہے کہ فیوزیلاژ یعنی جہاز کا مرکزی حصہ جہاں مسافر بیٹھتے ہیں میں بیشتر مسافروں کی لاشیں ہیں۔ تاہم ابھی تک فیوزیلاژ نہیں مل پایا۔

جہاز کے ملبے اور لاشوں کی تلاش میں 30 جہاز حصہ لے رہے ہیں۔

اسی بارے میں